ممبئی/ اورنگ آباد : 13 جنوری ( یو این آئی)کوویڈ-19 سے تحفظ فراہم کرنے کے مقصد کے پیش نظر دی جانے والی ” کوویشلڈ ” نامی ویکسین کو دینے کی تیاریاں آخری مراحل میں پہنچ گئی ہیں۔مہاراشٹرا میں ممبئی اور اورنگ آباد سمیت مختلف علاقوں میں یہ ویکسین پہنچانےکا عمل مکمل ہو چکا ہے۔ اس ویکسین کو دیئے جانے سے متعلق ایک اہم

اطلاع دیتے ہوئے ریاستی وزیرِصحت راجیش ٹوپے نےآج بدھ کو بتایا ہےکہ مرکزی حکومت کے ضابطے (پروٹوکول) کے مطابق ، 18 سال سے کم عمر والوں اور حاملہ خواتین نیز الرجی کے شکار افراد کو یہ ویکسین نہیں دی جائے گی۔انھوں نے کہا کہ "ہم نے فیصلہ کیا ہے کہ منتخب افراد کو مکمل دو خوراکیں دیں ، پہلی خوراک اب اور دوسرا 4-6 ہفتوں کے بعد دی جائے گی” انہوں نے کہا کہ مہاراشٹرا کو ابھی تک متوقع 17 لاکھ 50ہزار میں سے 9 لاکھ 63 ہزار خوراکیں موصول ہوئی ہیں – جو پونے کے

مینوفیکچررز سیرم انسٹی ٹیوٹ آف انڈیا (ایس آئی آئی) کی طرف سے ریاستی حکومت کے کوٹے کا تقریبا 55 فیصد ہے۔”

منگل کی رات سے ، ویکسین کی یہ خوراکیں، ریاست بھر میں روانہ کی جارہی ہے ، جن میں ممبئی ، تھانہ ، پونے ، کولھا پور ، ناسک ، اکولہ، ناگپور اور دیگر مقامات پر پہنچائی گئی ہیں جیاں سے یہ 511 نامزد ویکسی نیشن مراکز تک روانہ کی جائیں گی۔ انھوں نے بتایا کی ان 511 مراکز میں 129 مراکز گنجان آبادی والے ممبئی میٹرو پولیٹن ریجن (ایم ایم آر) کو دی گئی ہیں، جہاں پر گذشتہ 10 مہینوں میں 19274 افراد کوویڈ -19 سے یلاک ہوئے اور 6 لاکھ 77 ہزار 274افراد متاثر ہوئے ہیں۔ اس ملک کے تجارتی دارالحکومت ممبئی کو ریاست کے 72 ویکسینیشن مراکز کا حصہ ملا ہے۔ جہاں ملک میں سب سے زیادہ متاثرہ کوویڈ 19 کے وبائی امراض کی وجہ سے اب تک 11200 اموات ہوچکی ہیں۔

برہان ممبئی میونسپل کارپوریشن (بی ایم سی) کے کمشنر آئی ایس چہل نے بتایا کہ کوویڈ ۔19 کے لئے ‘کوویشیلڈ’ ویکسین کا پہلا حصہ بدھ (جنوری 13) کو صبح سویرے ممبئی پہنچا۔ چہل نے یہاں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا ، "یہ ویکسین صحت کے عہدیداروں اور پولیس سیکیورٹی کے ساتھ بی ایم سی کی ایک خصوصی گاڑی کے ذریعہ پونے سے ممبئی لائی گئی تھی۔ اسٹاک پہلے ہی پریل میں بی ایم سی ایف / ساؤتھ ڈویژنل آفس پہنچا ہے۔” آئی ایس چہل

نے مزید کہا ، "اور اب ہمارے لئے 16 جنوری کو ممبئی میں ویکسی نیشن مہم کے قومی آغاز کے مطابق ، ویکسینیشن شروع کرنا ممکن ہوگا۔اورنگ آباد میں آج ایک پریس کانفرس میں ضلع کلکٹر سنیل چوہان نے اس ویکسینیشن مہم کو کامیاب بنانے کے عزم کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ہم کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے میں کامیاب ہوگئے ہیں۔ اگلا مرحلہ ویکسی نیشن ہے۔ جسے انتظامیہ اور تمام ڈاکٹروں کے اشتراک سے کامیاب کیا جائے گا۔ انھوں نے بتایا کہ آج اورنگ آباد شہر اور دیہی علاقوں کے جملہ13 مراکز کےلیے ویکسین کی خوراکیں اورنگ آبا پہنچ گئی ہیں۔آج ، 13 جنوری کو اورنگ آباد میونسپل کارپوریشن کو20 ہزار کوڈ ویکسین کی ملی۔ اس موقع پر ایڈیشنل کمشنر بی۔ نمانے ، ہیلتھ میڈیکل آفیسر ڈاکٹر نیتا پڈالکر ، ڈپٹی کمشنر مسز آپنا تھیٹی ، عالمی ادارہ صحت کے ڈاکٹر مجیب سید ، میڈیکل آفیسر ڈاکٹر اج والا بھمرے اور دیگر افسران موجود تھے۔اس ضمن میں ڈاکٹر نیتا پڈالکر نے بتایا کہ انہیں بنیسیل نگر میں ویکسین کولڈ اسٹوریج میں رکھا جائے گا اور صحت کے کارکنوں کی ویکسینیشن 16 جنوری سے ابتدائی مرحلے میں شروع ہوگی۔

اںھوں نے مزید کہا کہ حکومتی ہدایت کے مطابق ، اس وقت پانچ ویکسینیشن مراکز ،بھیم نگر میں پرائمری ہیلتھ سنٹر سڈکو این 11 (ڈرائی رن ہسپتال) ، سعادت نگر میں پرائمری ہیلتھ سنٹر ، سلک ملک کالونی اسپتال ، اور، بنسیال نگر اسپتال مراکز میں ڈاکٹروں اور ہیلتھ ورکرز کو اس کی خورک پلائی جائی گی۔ اس کے علاوہ 122 ویکسینیشن مراکز تیار ہیں۔اس موقع پر عالمی ادارہ صحت کے ڈاکٹر مجیب سید (WHO) کے ڈاکٹر مجیب سید نے کہا کہ یہ ویکسین محفوظ ہے اور لوگوں کو اس سے خوفزدہ نہیں ہونا چاہئے۔واضح رہے کہ جہاں ایک طرف حکومت اس

ویکسینشن کے ذریعے عوام کو تحفظ فراہم کرنےکے لیےکوشاں ہے اور اس کے لیے بڑے پیمانے پر تیاریاں کر رہی ہے، تو وہیں دوسری طرف عوام میں اس ویکسن کے سلسلے میں تذبذب اور خشات پائے جا رہے ہیں۔ اور لوگ ابھی تک اس ویکسین کی رہا ہے کی مختلف افادیت کے بارے میں شک و شبہ میں مبتلاء ہیں۔ اور اسی درمیان سوشل میڈیا پر گشت کر رہی ایک ویڈیو کے باعث عدم اطمنان کی کیفیت میں مزید اضافپ ہوا ہے۔ سوشل میڈیا پر گشت کرنے والی اس ویڈیو میں کہا گیا ہے کہ ویکسینشن کے نام پر ڈیجیٹل QR CODE لگایا جائے گا۔ اور پر فرد کی ٹریکنگ کی جائے گی۔ واضح رہے کہ کل اورنگ آبد میں ضلع کے تمام

ڈاکٹرز ، پرائمری ہیلتھ سنٹرز میں نرسوں ، ہیلتھ ورکرز ، اساتذہ ، آنگن واڑی کارکنوں کے ساتھ ساتھ تمام متعلقہ انتظامی اداروں ایک ورکشاپ میں ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کے ڈاکٹر مجیب سید نے کوویڈ ۔19 ویکسی نیشن سے کیا مراد ہے؟ ویکسین کی اقسام ، حفاظتی ٹیکوں کے دوران احتیاطی تدابیر ، اندراج ، آن لائن سرٹیفکیٹ وغیرہ کے بارے میں تفصیلی معلومات دی ۔ اور ان کے مطابق ویکسین محفوظ ہے اور لوگوں کو اس سے خوفزدہ نہیں ہونا چاہئے۔

BiP Urdu News Groups