ناندیڑ::26 نومبر۔(ورق تازہ نیوز) ریاستی حکومت نے ریاست میں کوویڈ بیماری کی وجہ سے مرنے والے ہر فرد کے ورثاءکو 50,000 روپے کی مالی امداد کی منظوری دی ہے۔ یہ فیصلہ محصول ومحکمہ جنگلات کے ڈپٹی سکریٹری سنجے دھرورکر کے دستخط سے جاری کیا گیا ہے۔سنٹرل گورنمنٹ ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی سرکلر کے بارے میں جی آر جاری کرتے ہوئے، 4 اکتوبر 2021 کو سپریم کورٹ کی طرف سے سپریم کورٹ کی رٹ پٹیشن نمبر 539/2021 اور اس کی درخواست نمبر 1120/2021 اور ریاست کے پبلک ہیلتھ ڈپارٹمنٹ کی طرف سے جاری کردہ حکم کا حوالہ ان کاغذات میں دیا گیا ہے۔

ریاست مہاراشٹر میں کوویڈ وباءنے لاکھوں جانیں لے لی ہیں۔ ان فوت شدہ افراد کومالی امداد دینے کے بارے میں بہت سی بحثیں ہوئیں اور اسی بحث کے نتیجے میں حکومت نے 50,000 روپے کی مالی امداد دینے کا اعلان کیا ہے۔ مالی امداد حاصل کرنے کے لیے اس شخص کا کوویڈ سے متاثر ہونا لازمی ہے اگر وہ شخص کوویڈ ہونے کے 30 دنوں کے اندر مر جاتا ہے، تواسکی موت کو کوویڈ کے زمرہ میں سمجھا جائے گا یہاں تک کہ اگر کوئی ایسا شخص اسپتال کے باہر مر جاتا ہے اور کوویڈ کی تشخیص کے بعد خودکشی کر لیتا ہے، تو اسے کووڈ کی موت سمجھا جائے گا۔ یہاں تک کہ اگر کوئی مریض جو کووِڈ کی تشخیص کے بعد صحت یاب ہوا ہواور 30 دن کے بعد مر جاتا ہے، تو اسے کووِڈ موت سمجھا جائے گا۔کوویڈ 19 کے مطابق، مرنے والے کے قریبی رشتہ داروں کو ریاستی حکومت کے ذریعہ تیار کردہ ویب پورٹل پر آن لائن درخواست دینا ہوگی۔ یہ درخواست سیتو سوویدھا کیندر اور گرام پنچایت کے کمپیوٹر سے بھری جا سکتی ہے۔

درخواست دہندگان کو اپنی تفصیلات کے ساتھ آدھار کارڈ نمبر، اپنے بینک کی تفصیلات، میت کی تفصیلات، متوفی کی پیدائش اور موت کے رجسٹریشن سرٹیفکیٹ اور دیگر رشتہ داروں کے عدم اعتراض کے اعلان کے ساتھ منسلک کرنے کی ضرورت ہے۔ اگر متوفی کا آدھار رجسٹریشن نمبر دستیاب ہے، تو کمپیوٹر سسٹم پر درخواست خود بخود قبول ہو جائے گی اگر محکمہ صحت عامہ کے پاس دستیاب کووڈ موت کا ڈیٹا متوفی کے آدھار نمبر سے میل کھاتا ہے۔ریاستی حکومت کے ذریعہ 26 نومبر کو اعلان کردہ اس فیصلے کو عوام کے لیے ریاستی حکومت کی ویب سائٹ پر کوڈ 202111261612210519 کے طور پر شائع کیا گیا ہے۔

ورق تازہ نیوز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں  https://t.me/waraquetazaonlineاور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔