لاپرواہی کی کوئی گنجائش نہیں۔ عوام کو خوف سے دوررکھنا ہوگا ۔ چیف منسٹروں کے ساتھ ویڈیو کانفرنس

نئی دہلی : ملک کی کچھ ریاستوں میں کورونا وبا کے ایک بار پھر نئے سرے سے پھیلنے پر سنجیدگی سے کام لیتے ہوئے وزیراعظم نریندر مودی نے ریاستی حکومتوں سے کہا ہیکہ وائرس کی دوسری لہر کے خلاف تیزی سے اقدام کرکے فوراً روک تھام کرنے کی ضرورت ہے ۔ مودی نے چہارشنبہ کو ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام علاقوں کے وزرائے اعلیٰ کے ساتھ ویڈیو کانفرنس میں کہاکہ ہمیں کورونا کی اس ابھرتی دوسری لہر کو فوراً روکنا ہوگا۔ اس غرض سے ہمیں فوراً فیصلہ کن اقدام کرنا ہوگا۔ میٹنگ میں ملک میں کورونا وائرس کی تازہ صورتحال کا جائزہ لیا گیا۔کورونا کے خلاف مہم میں اب تک کی حصولیابیوں کو برقرار رکھنے پر زور دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اب لاپرواہی کی کوئی گنجائش نہیں ہونی چاہئے ۔ انہوں نے کہاکہ کورونا کی لڑائی میں ہم آج جہاں تک پہنچے ہیں، اس سے آنے والا اعتماد، لاپرواہی میں نہیں بدلنا چاہئے ۔ ہمیں عوام کو خوف میں مبتلا ہونے سے بچانا ہے اور پریشانی سے خلاصی بھی دلانی ہے ۔ ٹسٹ، ٹریک اور ٹریٹ کے سلسلے میں بھی ہمیں اتنا ہی سنجیدہ ہونے کی ضرورت ہے جیسا کہ ہم گذشتہ ایک برس سے کرتے آ رہے ہیں۔کنٹینمنٹ زون میں کورونا وائرس پر روک لگانے کے لیے کورونا ٹسٹ کو لازمی اور اس کی تعداد بڑھانے پر زور دیتے ہوئے وزیراعظم نے کہاکہ ہر کورونا متاثرہ شخص کے رابطوں کو کم سے کم وقت میں ٹریک کرنا اور آر ٹی پی سی آر ٹسٹ ریٹ 70 سے زیادہ رکھنا اہم ہے ۔ ہمیں چھوٹے شہروں میں ٹسٹنگ کو بڑھانا ہو گا۔ ہمیں چھوٹے شہروں میں ریفرل سسٹم اور ایمبولینس نیٹ ورک پر خصوصی توجہ دینا ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں ٹیکہ اندازی کی رفتار مسلسل بڑھ رہی ہے ۔ ایک دن میں 30 لاکھ افراد کی ٹیکہ اندازی کرنے کے اعداد و شمار کو عبور کیا جا چکا ہے ۔ ساتھ ہی انہوں نے کہاکہ ہمیں ویکسین ڈوز کے برباد ہونے کے مسئلے کو بہت سنجیدگی سے لینا ہے۔ وزیرداخلہ امت شاہ نے ان اضلاع کا ذکر کیا جہاں کورونا وائرس پر روک لگانے کے لیے خصوصی توجہ دیے جانے کی ضرورت ہے ۔ مرکزی سکریٹری برائے داخلہ اجئے بھلا نے بھی کورونا کی تازہ صورتحال اور ٹیکہ اندازی کے لائحہ عمل کے بارے میں ایک پیشکش کی۔


اپنی رائے یہاں لکھیں