کراکس – ایجنسیاں. سماجی رابطے کی معروف ویب سائٹ "فیس بک” کے ترجمان نے ہفتے کے روز بتایا کہ وینزویلا کے صدر نکولس میڈورو کے پیج کو منجمد کر دیا گیا ہے۔ ترجمان کے مطابق میڈورو نے کووڈ-19 کے بارے میں گمراہ کن معلومات کی روک تھام سے متعلق فیس بک کی متعلقہ پالیسیوں کی خلاف ورزی کی۔ وینزویلا کے صدر نے ایک ایسی دوا کی تشہیر کی جس کے بارے میں دلیل کے بغیر ان کا دعوی ہے کہ یہ کرونا کے مرض کا علاج کرتی ہے۔

میڈورو نے رواں سال جنوری میں کہا تھا کہ "کارواٹیویر” نامی دوا ایک پودے کے مواد سے تیار کی گئی ہے۔ منہ کے ذریعے کھائی جانے والی اس دوا سے کرونا وائرس نارمل ہو جاتا ہے اور اس کے سائیڈ ایفیکٹس بھی نہیں ہیں۔ ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ اس دعوے کی سپورٹ میں کوئی سائنسی دلیل نہیں ہے۔

فیس بک نے اپنی ویب سائٹ پر سے میڈورو کا ایک وڈیو کلپ بھی حذف کر دیا ہے۔ وڈیو میں میڈورو مذکورہ دوا کی تشہیر کرتے نظر آ رہے ہیں۔

فیس بک ترجمان نے غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کو بتایا کہ "ہماری ویب سائٹ عالمی ادارہ صحت کی ہدایات کی پیروی کر رہی ہے جس کے مطابق اس وقت کرونا وائرس کا کوئی علاج موجود نہیں ہے”۔

نکولس میڈورو نے اپنی ریکارڈ شدہ وڈیو میں کہا کہ یہ دوا انیس ویں صدی میں وینزویلا کے ایک ڈاکٹر خوسے ہرنانڈز کا "کرشمہ” ہے۔

وینزویلا کی وزارت اطلاع نے اس معاملے پر تبصرے کی درخواست کا کوئی جواب نہیں دیا۔