Waraqu E Taza Online
Nanded Urdu News Portal - ناندیڑ اردو نیوز پورٹل

ہریانہ : کورونا مریض تڑپتا رہا مگر ڈاکٹر یا اسٹاف نے کوئی مدد نہیں کی، مریض کی موت

حصار، 22 نومبر (یو این آئی) ہریانہ میں کانگریس کے رہنما اور ہریانہ ٹیکس ٹریبونل کے سابق رکن ہرپال بورا نے ہانسی جنرل اسپتال میں تڑپتے کورونا مریض کی مدد کو ڈاکٹر اور اسٹاف کے آگے نہ آنے کے معاملے کی اعلیٰ سطحی تفتیش کا مطالبہ کیا ہے۔ مسٹر بورا نے آج یہاں کہا کہ ہانسی کے جنرل اسپتال میں کووِڈ۔19 مریض موہن لال فرش پر تڑپتا رہا اور اسپتال کے ڈاکٹروں اور اسٹاف نے اس کی کوئی خبر نہیں لی۔

مسٹر بورا نے آج یہاں کہا کہ ہانسی کے جنرل اسپتال میں کووِڈ۔19 مریض موہن لال فرش پر تڑپتا رہا اور اسپتال کے ڈاکٹروں اور اسٹاف نے اس کی کوئی خبر نہیں لی۔

مریض کو اسٹریچر نہیں ملا تو اس کے بیٹا نوین خود ہی تیسری منزل سے اسٹریچر لے کر آیا۔ موہن لال گذشتہ تین اکتوبر کو کورونا پوزیٹیو پائے گئے تھے۔ اس دوران جنرل اسپتال میں ڈاکٹروں نے موہن لال کے علاج میں لاپرواہی برتی اور وہ زمین پر پڑے بری طرح تڑپتے دیکھے گئے۔ بعد ازاں انہوں نے دم توڑ دیا۔ اس واقعہ کی ویڈیو بھی بعد میں وائرل ہو گئی۔ انہوں نے بتایا کہ اس لاپرواہی کی شکات نوین نے ریاست کے وزیراعلیٰ کو بھیج دی ہے۔ انہوں نے اس معاملے کی اعلیٰ سطحی تفتیش کا مطالبہ کرتے ہوئے خاطی افسران اور اہلکاروں کے خلاف کاروائی کرنے کا مطالبہ کیا۔

اس واقعہ کی ویڈیو بھی بعد میں وائرل ہو گئی۔ انہوں نے بتایا کہ اس لاپرواہی کی شکات نوین نے ریاست کے وزیراعلیٰ کو بھیج دی ہے۔ انہوں نے اس معاملے کی اعلیٰ سطحی تفتیش کا مطالبہ کرتے ہوئے خاطی افسران اور اہلکاروں کے خلاف کاروائی کرنے کا مطالبہ کیا۔