ممبئی:  اداکار راہل ووہرا 9 اپریل کو کورونا سے جنگ ہار گئے۔ راہل وہرانے ہفتے کے روز فیس بک پر ایک پوسٹ لکھی اور لوگوں سے مدد کی اپیل کی۔ کچھ ہی گھنٹوں بعد ا ن کا انتقال ہوگیا۔ اب ، راہل کی موت کے بعد ، ان کی اہلیہ جیوتی تیواری نے ایک ویڈیو شیئر کی ہے۔ انہوں نے ویڈیو شیئر کرتے ہوئے ہسپتال والوں  پر سنگین الزامات لگائے   ہیں   اوراپنے شوہر کے لئے  انصاف کا مطالبہ کیا۔

 ویڈیو میں آپ دیکھ سکتے ہیں کہ  وہ  آکسیجن ماسک  ہٹا کر بولتے ہیں ، اس کی بہت ہی قیمت ہے آج کے وقت میں۔ بغیر اس کے مریض چھٹپٹا  جاتا ہے  ۔ اس کے بعد وہ ماسک پھر سے لگاتے ہیں  اور پھر ہٹا کر کہتے ہیں   اس میں کچھ نہیں آرہا ہے  ۔ راہل آگے کہتے ہیں کہ   اٹینڈنٹ  آئی تھی  ،  میں نے اس کو بولا  تو وہ بولی ایک بوتل  ہوتی ہے،  اس سے  پانی آ – جا رہا ہے۔   اس کے بعد وہ چلے جاتے ہیں ۔ پھر  ان کو آوازیں لگاؤ، آتے ہی نہیں ۔ ایک ڈیڑھ گھنٹے کے بعد آتے  ہیں ، تب تک مینیج کرو ۔ پانی چھڑ  کو ، اس کو لگاؤ۔ کسی کو بولو تو بو ل رہے  کہ ایک منٹ  میں آرہے ہیں اور آتے ہی  نہیں ہیں ، میں اس خالی ماسک کا کیا کروں؟

ویڈیو شیئر کرتے ہوئے  راہل کی اہلیہ نے لکھا کہ  ‘ہر راہل کے لئے انصاف۔ میرا راہل چلا گیا ہے ، سبھی جانتے ہیں لیکن  کیسے گیا ، یہ کوئی نہیں جانتا ۔ راجیو گاندھی سپر اسپیشلٹی ہاسپٹل دہلی۔ اس طرح سے  علاج  کیا جاتا ہے وہاں ۔ امید کرتی ہوں کہ میرے شوہر کو انصاف ملے گا ۔ ایک اور اہل ا س دنیا سے نہیں جانا چاہئے ۔ بتایں کہ  راہل نے اپنی آخری پوسٹ میں لکھا تھا  کہ  ‘اگر مجھے اچھا علاج مل جاتا تو میں بھی بچ جاتا  ۔ تمہارا راہل ۔  جلد جنم لوں گا   اور اچھا کام کروں گا ، اب ہمت ہار چکا ہوں ۔