حیدرآباد28اپریل(یواین آئی) ڈائرکٹر صحت عامہ تلنگانہ ڈاکٹر سرینواس راو نے واضح کیا ہے کہ کورونا کی روک تھام کے لئے ریاستی حکومت کی جانب سے کئے جانے والے اقدامات کے بہتر نتائج سامنے آرہے ہیں۔انہوں نے انتباہ دیتے ہوئے کہا کہ کورونا کی روک تھام کے لئے آئندہ تین تا چار ہفتے کافی اہمیت کے حامل ہیں۔اس عرصہ کے دوران عوام کو چوکس رہنے کی ضرورت ہے۔انہوں نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ مئی کے اواخر تک تمام کو چوکسی اختیار کرنی چاہئے۔ماسک کا مناسب استعمال بھی کرنا چاہئے۔انہوں نے تجویز پیش کی کہ ابھی سے ہی کافی احتیاط کی جائے۔شادیوں کا تہواروں کا موسم آرہا ہے اسی لئے اضافی احتیاط کی ضرورت ہے۔انہوں نے کہا کہ کوتاہی کام میں نہیں آئے گی۔انہوں نے نشاندہی کی کہ ریاست میں اب تک تقریبا 45لاکھ افراد کو کورونا ٹیکے دیئے گئے۔عوام کورونا کی روک تھام کے لئے مکمل تعاون کررہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ گذشتہ ہفتہ کے مقابلہ ریاست میں اس ہفتہ کے دوران صورتحال میں بہتری ہوئی ہے۔ریاست کے کورونا معاملات میں استحکام دیکھاجارہا ہے۔انہوں نے کہا کہ تقریبا80تا90فیصد مثبت معاملات میں مریضوں کو اسپتال میں داخل کروانے کی کوئی ضرورت نہیں ہے بلکہ صرف دس فیصد معاملات میں ہی مریضوں کو اسپتال میں داخل کروانے کی ضرورت پڑرہی ہے۔انہوں نے کہاکہ فی الحال ریاست میں روبہ صحت ہونے کی شرح 95فیصد ہے۔پہلے مرحلہ میں روبہ صحت ہونے کی شرح ملک میں 99.5فیصد تھی۔انہوں نے کہا کہ بغیر علامات کے بھی کورونا سے لوگ متاثر ہورہے ہیں۔ہم،عوام میں اس مرض کے تعلق سے بیداری پیداکررہے ہیں اور علاج کے بارے میں بھی بتایاجارہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ جیسے ہی علامات ظاہر ہوں فوری طور پر اس کے معائنے کروائے جائیں۔انہوں نے کہا کہ ریاست میں 50ہزار سے زائد بستر،18000سے زائد آکسیجن والے بستر اور دس ہزارسے زائد آئی سی یو بستر ہیں۔انہوں نے وضاحت کی کہ صحت عامہ کے کارکن اس مرض کے علاج کے لئے پیش پیش ہیں۔اس بحران کی گھڑی میں اپنے خاندانوں اور شخصی زندگی کی قربانی دیتے ہوئے یہ اسٹاف ارکان کام کررہے ہیں اور عوام کی خدمت کررہے ہیں۔وزیراعلی کے چندرشیکھرراو صورتحال پر نظر رکھے ہوئے ہیں۔وزیراعلی کے کورونا سے مثبت پائے جانے کے باوجود بھی وہ کورونا سے متعلق اہم تجاویز دے رہے ہیں اور وقتافوقتا صورتحال پر نظر رکھے ہوئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ہر گھنٹہ وزیراعلی صورتحال سے واقفیت حاصل کررہے ہیں۔