• 425
    Shares

*مولانا کلیم صدیقی کو رہا کیا جائے*

کل جماعتی تحریک،اردھاپور کی جانب سے تحصیل کو میمورنڈم دیا گیا
اردھاپور (شیخ زبیر)

لکھنو ATS کی جانب سے معروف شخصیت مولانا کلیم صدیقی صاحب کی گرفتاری کو سنجیدگی سے لیتے ہوئے ملک بھر میں مسلمانوں نے سخت احتجاج درج کیا ہے۔اسی تسلسل کا حصہ بنتے ہوئے کل جماعتی تحریک،اردھاپور کی جانب سے تحصیل دار کو ایک مستحضر پیش کیا گیا اور یہ مطالبہ کیا گیا کہ مولانا کلیم صدیقی صاحب کو بلا تاخیر رہا کیا جائے اور ان پر لگے الزامات کو کالعدم کیا جائے۔
واضح رہے کہ بھارت کے آئین میں آرٹیکل 25 کے مطابق ملک میں رہنے والے ہر باشندے کو اس بات کا حق دیا گیا ہے کہ وہ اپنے مذہب پر عمل کرسکتا ہے اور اس کی تبلیغ و اشاعت کر سکتا ہے۔بھارت میں مسلمانوں کا یہ بنیادی حق ہے۔مولانا کلیم صدیقی صاحب ملک ہی نہیں بلکہ عالمی سطح پر تبلیغ دین کے حوالے سے معروف شخصیت ہیں،انہیں اسلامی فوبیا سے متاثر یو پی پولس نے گرفتار کیا ہے۔ایسے وقت میں جب کہ ملک کے وزیر اعظم نے UNO میں بھارت کے سیکولر ملک ہونے کی تعریف کی،یہ بات قابل افسوس ہے کہ انہی کی پارٹی کی حکومت یو پی میں ہے،اور وہیں بھارت کے سیکولر دستور کا اس طرح مذاق بنایا جا رہا ہے۔
اس موقع سے
محمد مشتاق فلاحی
صدر کل جماعتی تحریک،
حافظ عبد الکریم
سیکریٹری جنرل کل جماعتی تحریک،
مفتی فرقان خان
امام وخطیب مسجد بلال، مولانا یوسف،
حافظ عماد،
مفتی عامر، جناب عبد اللہ خان صاحب امیر جماعت اسلامی،
حیدر جمال،وحدت اسلامی،حافظ نوید صدر جمیعت العلماء، شیخ لائق صاحب نمائندہ صدر بلدیہ اردھاپور اڈوکیٹ سید عمران علی، عبد المصور خطیب،
سلطان منیار،
غازی مصلح الدین،
افسر صدیقی، شاکر انعامدار،
فضل احمد خان،
پرویز نادر، عنایت خان و کل جماعتی تحریک کے ذمہ داران،ارکان شوری،شہر کے علماء وائمہ،شہر کی سیاسی قیادت،مختلف جماعتوں کے نمائندے اور شہر کے مسلم نوجوان موجود رہے۔

ورق تازہ نیوز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں  https://t.me/waraquetazaonlineاور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔