سری نگر، 24 مارچ (یو این آئی) جموں وکشمیر کے گرمائی دارالحکومت سری نگر کے ڈل گیٹ علاقے میں منگل کے روز سینٹرل ریزرو پولیس فورس (سی آر پی ایف) کے دو اہلکار آپس کی لڑائی میں مارے گئے۔سی آر پی ایف کے پی آر او پنکج سنگھ نے یو این آئی اردو کو بتایا کہ آپس کی لڑائی یا برادر کشی کا یہ ‘بدقسمت واقعہ’ ڈلگیٹ میں واقع سی آر پی ایف کی واٹر ونگ کیمپ میں پیش آیا ہے۔


انہوں نے کہا: ‘181 بٹالین سے وابستہ دو سی آر پی ایف اہلکاروں نے منگل کی سہ پہر قریب چار بجے ایک دوسرے پر گولیاں چلائیں جس کے نتیجے میں دونوں اہلکار شدید طور پر زخمی ہوئے۔ انہیں فوری طور پر قریبی طبی مرکز لے جایا گیا جہاں ڈاکٹروں نے انہیں مردہ قرار دیا’۔


سی آر پی ایف کے پی آر او نے مہلوک اہلکاروں کی شناخت کانسٹیبل جالا وجے سنگھ اور سیجو پی کے کے طور پر ہوئی ہے۔
انہوں نے مزید کہا: ‘معاملے کی تحقیقات شروع ہوچکی ہیں۔ یہ ہمارے لئے بہت بری خبر ہے۔ زندگی بہت قیمتی ہوتی ہے’۔
بتادیں کہ وادی کشمیر میں تعینات فوجیوں اور نیم فوجیوں میں خودکشی کے علاوہ آپس کی لڑائی یا برادر کشی کے واقعات میں اضافہ دیکھا جا رہا ہے۔ 1990 میں شروع ہونے والی مسلح شورش کے دوران ایسی کئی وارداتیں رونما ہوئیں جن میں افسروں سمیت درجنوں فوجی مارے گئے۔سرکاری اعداد وشمار کے مطابق گذشتہ ایک دہائی کے دوران فوج کی طرف سے اپنے ہی ساتھیوں کو مارنے کے 28 سے 30 واقعات جبکہ بھارتی فضائیہ میں دو واقعات پیش آچکے ہیں۔