احتجاجی کسانوں کا حکومت پر الزام ،چار ماہ میں کورونا کا کوئی کیس سامنے نہیں آیا

نئی دہلی:کسان قائدین نے کہا کہ حکومت ، کسان تحریک کو ختم کرنے کیلئے خوف کا ماحول پیدان کرنے کی سازش کررہی ہے۔ چہارشنبہ کو وزیر اعظم نریندر مودی نے تمام ریاستوں کے وزرائے اعلیٰ اور نمائندگان کیساتھ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کورونا کی صورتحال پر فکر کا اظہار کیا تھا۔کورونا کے بڑھتے معاملوں کے پیش نظر غازی آباد میں دفعہ 144 نافذ کی گئی تھی۔ غازی پور سرحد پر احتجاجی کسانوں کے ترجمان جگتار سنگھ باجوہ نے کہا ’’گزشتہ 4 مہینے سے لوگ یہاں بیٹھے ہوئے ہیں، کورونا کا کوئی معاملہ سامنے نہیں آیا۔ یہ حکومت کی سازش ہے تاکہ گاؤں کے لوگ اس تحریک میں شامل نہ ہوں۔ انہیں معلوم ہے کہ ان کی اصلیت کھل چکی ہے۔ کورونا کا خوف پیدا کیا جا رہا ہے۔ حکومت کی اس سازش کی ہم مذمت کرتے ہیں۔‘‘یوپی کے کسان قائد راج ویر سنگھ جادون نے بتایا ’’ہم جب یہاں آئے تھے اُس وقت بھی کورونا کی وباء تھی۔ زرعی قوانین کے خلاف دہلی کی سرحدوں پر کسان گزشتہ چار ماہ سے مسلسل احتجاج کررہے ہیں۔


اپنی رائے یہاں لکھیں