نئی دہلی: کسانوں کی تنظیمیں جمعرات کے روز 4 گھنٹے تک ملک گیر ‘ریل روکو’ پروگرام منعقد کریں گی کیونکہ وہ مرکزی فارم کے قوانین کے خلاف اپنا احتجاج جاری رکھیں ہوئے ہیں..غازی پور سرحد پر کسان آندولن کمیٹی کے ترجمان جگتار سنگھ باجوہ نے کہا کہ وہ 18 فروری کو دوپہر 12 بجے سے شام 4 بجے تک ‘ریل روکو’ پروگرام کے دوران پرامن احتجاج کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ ہم مسافروں کو تکلیف سے بچنے کے لئے تازگی پیش کریں گے۔

متحدہ کسان مورچہ

مشترکہ کسان مورچہ (ایس کے ایم) نے ملک بھر سے اس پروگرام کے لئے حمایت حاصل کرنے کی امید کرتے ہوئے پرامن احتجاج کا مطالبہ کیا ہے۔اس میں کہا گیا ہے ، “18 فروری کو دوپہر 12 بجے سے شام 4 بجے تک ملک گیر‘ ریل روکو ’پروگرام میں پرامن احتجاج کے لئے سب سے اپیل کریں۔ایس کے ایم نے مطالبہ کیا کہ حکومت کسانوں کے مسائل کو بغیر کسی تاخیر کے فوری حل کرے۔” “یہ واضح ہے کہ جدوجہد کے جاری مطالبات کو حل کرنے کے بجائے بی جے پی اس کا مقابلہ کرنے اور اسے ختم کرنے کی پوری کوشش کر

رہی ہے۔ ایس کے ایم حکمراں جماعت کے اس طرز عمل کی مذمت کرتی ہے اور مطالبہ کرتی ہے کہ حکومت کسانوں کے معاملات کو بغیر کسی تاخیر کے فوری حل کرے۔ ایس کے ایم نے اس عزم کا اظہار کیا ہے کہ وہ جدوجہد کو تیز کرے گا اور اس کی حمایت میں مزید کسانوں کو متحرک کرے گا۔ایس کے ایم نے بدھ کے روز مظفر پور میں آل انڈیا کرشک کھیت مزدور سنگھٹن کے زیر اہتمام پرامن احتجاج پر وشو

ہندو پریشد (وی ایچ پی) کے “غنڈوں” کے مبینہ حملے کی بھی مذمت کی۔ریلوے پروٹیکشن اسپیشل فورس کی 20 اضافی کمپنیاں تعینات ہیںاحتجاج کے پیش نظر ریلوے نے پورے ملک میں ریلوے پروٹیکشن اسپیشل فورس کی 20 اضافی کمپنیاں پنجاب ، ہریانہ ، اترپردیش اور مغربی بنگال پر مرکوز رکھے ہوئے ہیں..


اپنی رائے یہاں لکھیں