سڑک، ریل ٹرانسپورٹ اور مارکٹ بند ،ایمرجنسی خدمات برقرار
نئی دہلی۔ مودی حکومت کے 3 زرعی قوانین کے خلاف کسانوں کا احتجاج جاری ہے۔ سمیکتا کسان مورچہ نے اعلان کیا کہ کل ’بھارت بند‘ منایا جائے گا۔ احتجاجی کسانوں نے ملک کے شہریوں سے اپیل کی ہے وہ ’ بھارت بند ‘ کو کامیاب بنائیں۔ ایک بیان میں کسان یونینوں نے کہا کہ ملک گیر بھارت بند کا صبح 6 بجے سے آغاز ہوگا اور شام 6 بجے ختم ہوگا۔ زرعی قوانین کے خلاف دہلی سے متصل تین سرحدوں سنگھو ، غازی پور اور تکری میں کسانوں کا یہ احتجاج 4 ماہ سے جاری ہے۔ یونین قائدین نے کہا کہ کل ملک بھر میں تمام روڈ اور ریل ٹرانسپورٹ، مارکٹس، دیگر عوامی مقامات بند رہیں گے تاہم اسمبلی انتخابات والی ریاستوں کو استثنیٰ دیا جائے گا۔ کسان قائدین نے کہا کہ احتجاج میں حصہ لینے کیلئے ہزاروں افراد دور دور سے آرہے ہیں۔ کسان ایک ایسے وقت میں بھارت بند میں حصہ لے رہے ہیں جب کھیتوں میں گیہوں کی فصل تیار کھڑی ہے۔ راکیش ٹکیٹ نے کہا کہ احتجاجی کسان دہلی میں داخل ہوسکتے ہیں۔ بھارتیہ کسان یونین صدر راکیش ٹکیٹ نے مزید کہا کہ مرکزی حکومت ذات پات اور مذہب کی بنیاد پر ہمیں توڑنے کی کوشش کررہی ہے۔


اپنی رائے یہاں لکھیں