ممبئی ،6 اپریل (یو این آئی) مہاراشٹر نونرمان سینا (منسے ) کے صدر راج ٹھاکرے نے منگل کو حکومت سے کہا کہ وہ نجی اسپتالوں کے خلاف کاروائی کریں جو کوویڈ 19 کے مریضوں کا علاج کرنے سے انکار کررہے ہیں کیونکہ فی الوقت ریاست کو وبائی امراض کی دوسری لہر کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔راج ٹھاکرے نے کہا بہت سے اسپتالوں میں بیڈ دستیاب ہیں ، لیکن وہ ان مریضوں کو نہیں دے رہے ہیں جن کو ضرورت ہے۔ریاستی حکومت کو ایسے اسپتالوں کے خلاف سخت کارروائی کرنا چاہئے۔
انہوں نے کہا کہ ممبئی میونسپل کارپوریشن کی جانب سے الاٹ کی گئی زمین پر شہر میں بہت سے نجی اسپتال تعمیر کیے گئے ہیں وہ بی ایم سی کے پانی اور بجلی کا استعمال کرتے ہیں ، لیکن صحت کے بحران میں کورونا مریضوں کو بستر مہیا کرنے کے اپنے فرائض سے بھاگ رہے ہیں ۔

راج ٹھاکرے نے یہ بھی الزام لگایا کہ مہا وکاس آگھاڑی حکومت کورونا کی دوسری لہر کے بحران کو دور کرنے کے لئے پوری طرح تیار نہیں ہےراج ٹھاکرے نے اشارہ کیاکہ جب گذشتہ سال لاک ڈاؤن کے اعلان کے بعد دیگر ریاستوں کے لوگ مہاراشٹرا سے چلے گئے تھے تب میں نے کہا تھا کہ جب وہ واپس آئیں تو ان کی صحت کی جانچ کے بعد ہی انہیں مہاراشٹر میں آنے کی اجازت دینے کا مطالبہ کیا تھالیکن بدقسمتی سے ، ایسا نہیں کیا گیا۔انہوں نے کہا کہ ابھی حال ہی میں جب ریاستی حکومت کو جنوری کے آخر تک دوسری لہر کی ابھرتی علامتوں کا احساس ہوا تو انہیں فوری طور پر احتیاطی تدابیر اختیار کرنی چاہییے تھا۔معاشی بحران اور لوگوں کی روزی روٹی پر پڑنے والے اثرات کا ذکر کرتے ہوئے راج ٹھاکرے نے اپنے چچا زاد بھائی اور وزیر اعلی ادھو ٹھاکرے پر زور دیا کہ وہ چھوٹے تاجروں اور کاروباریوں کو اجازت دیں کہ وہ مینوفیکچرنگ کی سرگرمیوں کو جاری رکھیں تاکہ ہفتہ میں وہ کم سے کم دو سے تین بار اپنی مصنوعات فروخت کرسکیں۔

راج ٹھاکرے نے یہ بھی کہا کہ انہوں نے اس ہفتے وزیراعلیٰ سے ملاقات کی اور احتیاط کے طور پر تمام عمر کے لوگوں کے لئے ویکسینیشن ضروری لگوائیں ۔ایس ایس سی اور ایچ ایس سی کے طلباء کو بغیر امتحانات دیئے ہوئے انہیں پاس کریں حالانکہ وہ اپنا امتحان دینا چاہ رہے ہیں ۔سابق وزیر داخلہ انیل دیشمکھ کے خلاف ممبئی کے سابق پولیس کمشنر پرمبیر سنگھ کی جانب سے لگائے جانے والے الزامات پر راج ٹھاکرے نے اپنے پچھلے بیان کو دوہراتے ہوئے کہا کہ کیسے سابق پولیس کمشنر نے اپنے عہدے پر رہتے ہوئے اس بات کو دبائے رکھا ۔انہوں نے کہا کہ صنعت کار مکیش امبانی کے گھر کے باہر جو ایس یو وی گاڑی کھڑی تھی وہ کس کی ہدایت پر کھڑی کی گئی تھی اس کی جانچ ہونی چاہیئے ۔