کرناٹک میں کورونا بے قابو ہوتا جا رہا ہے۔ اسے دیکھتے ہوئے کرناٹک حکومت نے 10 مئی کی صبح سے 24 مئی کی صبح 6 بجے تک مکمل لاک ڈاؤن کا اعلان کر دیا ہے۔ وزیر اعلیٰ بی ایس یدی یورپا نے کہا ہے کہ ریاست میں کورونا کرفیو ناکام رہا ہے اس لیے مکمل لاک ڈاؤن کا فیصلہ لیا گیا ہے۔ لاک ڈاؤن کے دوران سبھی ہوٹل، پب اور بار بند رہیں گے۔ کھانے پینے کی دکانیں، گوشت کی دکانیں اور سبزیوں کی دکانیں صبح 6 سے 10 بجے تک کھلنے کی اجازت ہوگی۔

س درمیان کرناٹک میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کورونا وائرس انفیکشن کے 48 ہزار 781 نئے معاملے سامنے آئے ہیں اور 592 لوگوں کی موت ہوئی ہے۔ حالانکہ اس دوران 28 ہزار 623 لوگوں کو اسپتال سے چھٹی

گوا میں 9 مئی سے 23 مئی تک مکمل لاک ڈاؤن کا اعلان:

اس درمیان گوا کے وزیر اعلیٰ پرمود ساونت نے جمعہ کو ریاست میں 9 مئی سے 23 مئی تک ریاستی سطح پر کرفیو لگایا جائے گا۔ کووڈ چین کو توڑنے کے لیے لوگوں سے زیادہ سے زیادہ گھر کے اندر رہنے کی گزارش کی ہے۔ کرانے کی دکانوں سمیت ضروری سامانوں کی فروخت کرنے والے اسٹور صبح 7 بجے سے دوپہر ایک بجے تک کھلے رہنے دیے جائیں گے۔ کرفیو کی مدت کے دوران میڈیکل اسٹور بھی کھلے رہیں گے اور ریستوراں و رسوئی کو صبح 7 بجے سے شام 7 بجے تک کھلے رہنے کی اجازت ہوگی۔ ساونت نے کہا کہ اگر کوئی کرفیو کے دوران سڑکوں پر گھومتا ہوا دکھائی دیتا ہے، تو پولیس سزا کی دفعات کے تحت کارروائی کرے گی۔ کسی کو بھی غیر ضروری طور پر گھر سے باہر نہیں جانا چاہیے۔