جموں : کانگریس پارٹی نے چہارشنبہ کے روز جموں میں جموں وکشمیر میں جائیداد ٹیکس لگانے اور ڈیزل و پٹرول کی مہنگائی کے خلاف زبردست احتجاج درج کیا۔احتجاجی حکومت کے خلاف جم کر نعرہ بازی کرر ہے تھے اور جائیداد ٹیکس کو واپس لینے اور پٹرول، ڈیزل اور رسوئی گیس کی قیمتوں کو اعتدال میں رکھنے کا مطالبہ کر رہے تھے ۔اس موقع پر سینئر کانگریس لیڈر رمن بھلہ نے میڈیا کے ساتھ بات کرتے ہوئے کہا کہ ہماری مانگ ہے کہ پراپرٹی ٹیکس کو واپس لیا جائے اور جموں وکشمیر کا ریاستی درجہ بحال کرکے اسمبلی انتخابات منعقد کئے جائیں۔انہوں نے کہا: ‘ایک گورنر صاحب نے کہا تھا کہ دفعہ 370 کے ساتھ کچھ نہیں کیا جائے گا ان کے بعد دوسرے گورنر صاحب نے کہا تھا کہ جموں وکشمیر میں نوجوانوں کو پچاس ہزار نوکریاں دی جائیں گی لیکن یہ سب باتیں صحیح ثابت نہیں ہوئیں’۔ان کا کہنا تھا: ‘موجودہ گورنر صاحب نے اکتوبر میں ایک پبلک میٹنگ کے دوران کہا کہ کہیں بھی جائیداد ٹیکس نہیں لگے گا لیکن اب اس ٹیکس کو لاگو کیا جا رہا ہے ’۔ایک اور کانگریس لیڈر نے بتایا کہ کانگریس تب تک احتجاج جاری رکھے گی جب تک پراپرٹی ٹیکس کو واپس نہیں لیا جائے گا اور پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں کو اعتدال میں نہیں رکھا جائے گا۔ان کا الزام تھا کہ موجودہ مرکزی سرکار عوام کے ساتھ دھوکہ کر رہی ہے اور آئے روز پٹرول ، ڈیزل اور رسوئی گیس کی قیمتوں میں اضافہ ہو رہا ہے ۔


اپنی رائے یہاں لکھیں