کالی چرن مہاراج کی تحویل کے لئے مہاراشٹرا پولیس راے پور پہونچی

0 9

ممبئی، 30 دسمبر (یو این آئی) رائے پور میں ہوئ دھرم سنسد کے دوران مہاتما گاندھی کے خلاف توہین آمیز کلمات ادا کرنے والے گرفتار شدہ ہندو مذہبی رہنما کالی چرن مہاراج کی تحویل حاصل کرنے کے لئے مہاراشٹر پولیس کا ایک خصوصی دستہ ریاست چھتیس گڑہ کے راے پور شہر میں خیمہ زن ہے جو عدالت سے اسکی تحویل طلب کرکے اسے مہاراشٹرا لائیگا تاکہ ریاست میں اسکے خلاف درج شکایات پر کاروائ کی جاسکے ریاستی وزارات داخلہ کے ذرائع نے یہ باتیں کہی

ذرائع نے یہ بھی بتلایا کہ پونہ پولیس کی ایک ٹیم کو اسوقت راے پور کے لئے روانہ کیا گیا جب اسے مہاراج کی مدھیہ پردیش میں گرفتاری کیا اطلاع موصل ہوئ

مدھیہ پردیش کے کھجوراو شہر میں گرفتار مہاراج کو
چھتیس گڑہ کے راے پور شہر کی ایک عدالت میں پیش کیا جائگا جہاں مہاراشٹرا پولیس اسکی تحویل حاصل کرنے کی درخواست دیگی

واضح رہیکہ گزشتہ دنوں ریاستی ا سمبلی کے جاری سرمائ اجلاس کے دوران نائب وزیر اعلیٰ اجیت پوار نے یہ اعلان کیا تھا اور کہا تھا کہ ریاستی حکومت کالی چرن مہاراج کے تبصروں کے بارے میں رپورٹ طلب کرے گی اور سخت کارروائی کرے گی۔

مہاتما گاندھی کے خلاف ان کے تبصروں کا معاملہ ریاستی اسمبلی میں . این سی پی کے رکن نواب ملک نے . اٹھایا تھا اور کہا تھا کہ کالی چرن مہاراج کا تعلق مہاراشٹر کے اکولا سے ہے نیز انہوں نے باباے ہند ۔ مہاتما گاندھی کے خلاف جو توہین آمیز کلمات ادا کئے ہے اس پر مذہبی کے خلاف غداری کا مقدمہ درج کرکے اسے گرفتار کرنا چاہیے مہاراشٹرا میں بھی مہاراج کے خلاف متعدد مقامات پر ایف آئ آر درج ہے جسمیں پونہ آکولہ تھانہ اور دیگر شہر شامل ہیںکل شام ریاستی کابینی وزیر جتیدر آہواڑ نے بھی کالی چرن مہاراج کے خلاف تھانہ پولیس میں ایف آر درج کروایا تھا

رائے پور میں دھرم سنسد کے دوران کالی چرن مہاراج نے کہا تھا، ”اسلام کا ہدف سیاست کے ذریعے قوم پر قبضہ کرنا ہے۔ ہماری آنکھوں کے سامنے، انہوں نے(مسلمانوں نے 1947 میں قبضہ کر لیا تھا (تقسیم کا حوالہ دیتے ہوئے)… وہ پہلے ایران، عراق اور افغانستان پر قبضہ کر چکے تھے۔ انہوں نے سیاست کے ذریعے بنگلہ دیش اور پاکستان پر قبضہ کیا… میں ناتھورام گوڈسے کو سلام کرتا ہوں کہ اس نے گاندھی کو مارا۔” رائے پور پولیس نے گزشتہ دنوں مہاراج کے خلاف ایف آئی آر درج کی تھی۔