چین نے تین بچے پیدا کرنے کی منظوری دی

2

نئی دہلی، 31مئی (یو این آئی) چین نے پیر کو فیملی پلاننگ پالیسی میں نرمی دیتے ہوئے تین بچوں کی خواہش رکھنے والے جوڑوں کی حوصلہ افزائی کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔چین کی سرکاری میڈیا کے مطابق صدر شی جنپنگ نے پولٹ بیورو کی ایک میٹنگ میں اس پالیسی کو منظوری دی۔

چین نے 2016میں دہائیوں پرانی ایک بچے کی پالیسی میں تبدیلی کرتے ہوئے دو بچے پیدا کرنے کی پالیسی کو منظوری دی تھی لیکن یہ پالیسی شرح پیدائش کو برقرار رکھنے میں ناکام رہی ہے۔سرکاری میڈیا کے مطابق حکومت کی نئی آبادی پالیسی کے تحت شرح پیدائش بڑھانے کے اقدامات کئے جائیں گے جس سے ملک کی آبادی میں اضافہ ہوگا۔

اس سے ملک میں بزرگ آبادی کو درپیش مسائل سے نپٹنے اور انسانی وسائل کے بہتر استعمال کی ملک کی حکمت عملی کو کامیاب بنایا جاسکے گا۔ اس مہینے کی شروعات میں جاری آبادی کے اعدادو شمار کے بعد آبادی پالیسی میں تبدیلی کی امید ظاہر کی جارہی تھی۔

آبادی کے اعدادو شمار کے مطابق گزشتہ برس ملک میں ایک کروڑ 20لاکھ بچے پیدا ہوئے جو 2016کے ایک کروڑ 80لاکھ سے کافی کم ہیں۔ گزشتہ برس پیدا ہوئے بچوں کی تعداد 1960کے بعد سب سے کم ہے۔