چھتیس گڑھ کے بیجا پور میں نکسلی حملے میں22جوانوں کی شہادت کے معاملے میں کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے مرکز کی مودی حکومت کو نشانے پر لیا ہے۔ راہل گاندھی نے سوال اٹھایا ہے کہ اگر یہ معاملہ انٹلی جنس فلیئر کا نہیں ہے تو شائد اس آپریشن کو غلط طریقے سے چلایا گیا ہوگا۔ دراصل سی آر پی ایف سربراہ کلدیپ سنگھ نے نکسلی حملے کو لے کر بیان دیا تھا کہ یہ معاملہ نہ تو انٹلی جنس فلیئر اور نہ ہی آپریشن فلیئر کا ہے۔ سی آر پی ایف جوانوں نے انکاؤنٹر میں25سے30نکسلیوں کو بھی مار گرایا ہے۔ اس کے بعد ہی راہل گاندھی نے نکسلیوں اور جوانوں کی تعداد تقریباً برابر ہونے کو لے کر سوال کھڑا کیا ہے۔راہل گاندھی نے پیر کو ٹوئٹ کرکے پوچھا کہ اگر یہاں پر کوئی بھی انٹلی جنس فلیئر نہیں تھا تو مرنے کا طریقہ بتاتا ہے کہ یہ آپریشن بے حد غلط طریقے سے چلایا گیا تھا۔ ہمارے جوانوں کو اس طرح شہید نہیں ہونے دیا جاسکتا ہے۔


اپنی رائے یہاں لکھیں