پڑوسی ملک پنجاب میں ڈرون کے ذریعہ ہتھیار بھیج رہا ہے ۔ کیپٹن امریندر سنگھ کا دعویٰ

چنڈی گڑھ: چیف منسٹر پنجاب کیپٹن امریندر سنگھ نے پاکستان کو آئینہ دکھایا ہے۔ انہوں نے آج کہا کہ اسلام آباد کی طرف سے منصوبہ بند دہشت گردی دونوں ممالک کے درمیان تعلقات معمول پر آنے میں سب سے بڑی رکاوٹ ہے۔ پہلے پاکستان اس پر روک لگائے، پھر امن وشانتی سے متعلق بات چیت کرے۔ کیپٹن امریندر سنگھ نے یہ بھی کہا کہ ہندوستان میں دراندازی اب بھی جاری ہے۔ ہر دن سرحد پر پاکستانی فوجی اپنی جان گنوا رہے ہیں۔ پاکستان پنجاب کے اندر ڈرون کے ذریعہ ہتھیار اور ڈرگس بھیج رہا ہے۔ میری ریاست میں بدامنی پیدا کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔ سب سے پہلے اسے بند کیاجانا چاہئے۔دراصل پاکستانی فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوا نے جمعرات کو کہا کہ یہ ہندوستان اور پاکستان کے لئے ماضی کو بھولنے اور آگے بڑھنے کا وقت ہے۔ انہوں نے کہا کہ دونوں پڑوسی ممالک کے درمیان امن وامان سے جنوب اور وسط ایشیا میں ترقی کے امکانات کو کھوجنے میں مدد ملے گی۔ جنرل باجوا نے اسلام آباد سیکورٹی مذاکرات کے موقع پر کہا کہ تنازعہ کے سبب علاقائی امن وامان اور ترقی کے امکانات دونوں پڑوسی ممالک کے درمیان حل طلب مسائل کے سبب ہمیشہ یرغمال رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ میرا ماننا ہے کہ یہ وقت ماضی کو بھولنے اور آگے بڑھنے کا ہے۔ واضح رہے کہ ہندوستان نے گزشتہ ماہ کہا تھا کہ وہ پاکستان کے دہشت گردی، نفرت اور تشدد سے پاک ماحول کے ساتھ معمول کے مطابق، دوستانہ تعلقات کا خواہاں ہے۔ ہندوستان نے کہا تھا کہ اس کی ذمہ داری پاکستان پر ہے کہ وہ دہشت گردی اور دشمنی سے پاک ماحول تیار کرے۔
جنرل قمر باجوا کے بیان سے ایک دن پہلے وزیراعظم عمران خان نے اسی مقام پر یہ بیان دیا تھا۔ عمران خان نے بدھ کو کہا تھا کہ ان کے ملک کے ساتھ امن وامان رکھنے پر ہندوستان کو اقتصادی فائدہ ملے گا۔ انہوں نے کہا کہ اس سے ہندوستان کو پاکستانی سرزمین کے ذریعے وسائل سے مالا مال وسطی ایشیاء تک پہنچنے میں مدد ملے گی۔


اپنی رائے یہاں لکھیں