پاکستان بھر میں بجلی سربراہی مسدود

143

لاہور: پاکستان کی وزارت توانائی نے پیر کو کہا کہ قومی گریڈ کی فریکوئنسی کم ہونے کی وجہ سے صبح سے ہی ملک بھر میں بجلی کی بندہو گئی ہے۔وزارت نے ٹویٹ کیا، ”ابتدائی رپورٹوں کے مطابق، نیشنل گریڈ کا سسٹم فریکوئنسی آج صبح 0734 بجے کم ہو گئی، جس کی وجہ سے بجلی کا انتظام بڑے پیمانے پربند ہو گیا۔بجلی کے وزیر خرم دستگیر نے کہا کہ معاشی اقدام کے طور پر ایندھن کی بچت کے لیے رات کے وقت بجلی پیدا کرنے والی اکائیوں کو عارضی طور پر بند کر دیا جاتا ہے۔

مسٹر دستگیر نے کہا، ”آج صبح ساڑھے سات بجے جب سسٹم ایک ایک کرکے آن کیے گئے تو ملک کے جنوبی حصے میں جامشورو اور دادو کے درمیان فریکوئنسی میں تبدیلی کی اطلاع ملی۔ وولٹیج میں اتار چڑھاؤ آیا اور سسٹم ایک ایک کر کے بند ہو گئے۔ یہ کوئی بڑا بحران نہیں ہے۔“انہوں نے کہا کہ ان کی وزارت نے تربیلا اور ورسک میں کچھ گریڈ اسٹیشنوں کو بحال کرنا شروع کر دیا ہے۔انہوں نے دعویٰ کیا،”پشاور الیکٹرک سپلائی کمپنی (پی ای ایس سی او) اور اسلام آباد الیکٹرک سپلائی کمپنی (آئی ای ایس سی او) کے کچھ گریڈپہلے ہی بحال کر دیئے گئی ہیں۔

“اس دوران کراچی کے کئی علاقوں میں بجلی کی نہ ہونے کی بھی اطلاعات ہیں۔ کے الیکٹرک کے ترجمان نے اس کی وجہ نہیں بتائی ہے۔آ ئی ای ایس سی او کے ترجمان نے بتایا کہ اس کے 117 گریڈ اسٹیشن میں بجلی نہیں ہے۔دریں اثناپی ای ایس سی او نے اپنے سپلائی کرنے والے علاقوں میں بھی بجلی نہ ہونے کی تصدیق کی ہے۔جیو نیوز کی رپورٹ کے مطابق تین ماہ کے اندر یہ دوسرا موقع ہے کہ ملک میں بجلی نہیں ہے۔اس سے قبل گزشتہ سال اکتوبر میں کراچی، حیدر آباد، سکھر، کیٹہ، ملتان اور فیصل آباد میں بجلی چلی گئی تھی۔