ممبئ 6 جولائی (یو این آئی ) مہاراشٹر کے ایوان اسمبلی میں آج آخری روز سماجوادی پارٹی کے رکن اسمبلی رئیس شیخ نے پاورلوم صنعت سے وابستہ مسائل پیش کر تے ہوئے بھیونڈی اچل کرانجی اور مالیگاؤں میں پیدا شدہ حالات پیش کیا اور کہا کہ مالیگاؤں اور بھیونڈی میں پاورلوم صنعت انتہائی خستہ حالی کا شکار ہو کر رہ گئی ہے اور آہستہ آہستہ کورونا اور حالات کی وجہ سے زوال پذیر ہے ان صنعتوں کو استحکام بخشنے کیلئے انہیں بھی رعایت و مراعات اور سبسڈی دینے کی ضرورت ہے لیکن جو سبسڈی انہیں فراہم کی جاتی ہے وہ آن لائن ہے اور آن لائن میں تمام دستاویزات زمین کی ملکیت سمیت دیگر دستاویزات جمع کرنا مشکل ہوتا ہے کیونکہ بھیونڈی اور مالیگاؤں میں چھوٹی صنعتیں بھی ہیں کپڑوں کی تیاری میں یان 68 گریٹ جو کہ ابھی 14 سو پچاس روپیہ میں فروخت ہو رہا ہے اس کی قیمت میں اضافہ سے بھی پاورلوم صنعت میں اثر پڑا ہے رئیس شیخ نے سرکار کی توجہ اس جانب مبذول کراتے ہوئے کہا کہ جس طرح سے پاورلوم صنعت کو بجلی شرح میں سبسڈی ملتی ہے اسی طرز پر سبسڈی دی جائے اس کے ساتھ ہی چھوٹی صنعتوں کو بھی غیر سودی قرض دیا جائے تاکہ پاورلوم صنعت کے حالات بہتر ہو لیکن آج حالات دن بدن خراب ہو تے جارہے ہیں اور سرکار اگر اس پر توجہ نہیں دی تو مزید ابتر ہوجائیں گے مالیگاؤں میں تو مہنگائی کے سبب کئی پاورلووم صنعت بند ہوگئی ہیں جبکہ بھیونڈی میں صرف تین دنوں تک ہی کام جاری ہے سرکار اگر حالات قابو میں نہیں کرتی ہے تو بھیونڈی شہر بند ہوجائیگا۔


اسی کے ساتھ پاورلوم صنعت کی بدحالی کے سبب یہاں ودھان بھون کے باہر بینر لے کر سماجوادی لیڈر و رکن اسمبلی ابوعاصم اعظمی اور رئیس شیخ نے احتجاج بھی کیا بینر لے کر ان صنعتوں کو انصاف دینے کا مطالبہ کرتے ہوئے مطالبات پورے کر نے کا مطالبہ کیا ہے جو بینر لے کر ابوعاصم اعظمی اور رئیس شیخ کھڑے تھے اس پر تحریر تھا بھیونڈی, مالیگاؤں,, اچل کرانچی سمیت مہاراشٹر کے سبھی پاورلوم مزدوروں, کارخانہ دار وں سے سوتیلا سلوک بند کرو اسی مسائل کو ایوان میں بھی رئیس شیخ نے پیش کر کے حالات کو بہتر بنانے کا مطالبہ کیا-