ممنوع دہشت گرد تنظیم انڈین مجاہدین کے رکن ہونے کے الزامات کے تحت گرفتار عبدالواحید (بھٹکل) نے دہلی ہائی کورٹ میں اس کے مقدمہ کی جلد از جلد سماعت شروع کیئے جانے کی درخواست داخل کی ہے، ملزم کو قانونی امداد فراہم کرنے والی تنظیم جمعیۃ علماء مہاراشٹر (ارشد مدنی) قانونی امداد کمیٹی کے سربراہ گلزار اعظمی کی ہدایت پر ایڈوکیٹ ایم ایس خان نے دہلی ہائی کورٹ میں پٹیشن داخل کی ہے جس پر ہائی کورٹ نے قومی تفتیشی ایجنسی NIA سے جواب طلب کیا ہے۔دو رکنی ہائی کورٹ کے جسٹس سدھارتھ میریدول اور جسٹس انوپ جئے رام نے پٹیشن کی سماعت کرتے ہوئے استغاثہ سے جواب طلب کیا ہے، دوران بحث ایڈوکیٹ ایم ایس خا ن نے عدالت کو بتایا کہ ملزم گذشتہ پانچ سالوں سے جیل کی سلاخوں کے پیچھے مقید ہے اور ابھی تک اس کے مقدمہ میں چارج بھی فریم نہیں ہوا ہے۔ایڈوکیٹ ایم ایس خا ن نے عدالت کو بتایا کہ مقدمہ کی سماعت میں ہورہی غیر معمولی تاخیر کی وجہ سے ملزم کو حاصل اس کے بنیادی حقوق کی خلاف ورزی ہورہی ہے لہذا ملزم کو ضمانت پر رہا کیا جائے


اپنی رائے یہاں لکھیں