ٹی ٹوئنٹی ورلڈکپ: پاکستان نے جنوبی افریقہ کو شکست دے دی

660

ٹی ٹوئنٹی ورلڈکپ 2022 کے گروپ ٹو کے میچ میں بارش سے متاثرہ میچ میں پاکستان نے جنوبی افریقہ کو شکست دے دی۔ سڈنی میں کھیلے جارہے اس میچ میں پاکستان نے جنوبی افریقہ کو جیت کے لیے 186 رنز کا ہدف دیا تھا۔ہدف کے تعاقب میں مصروف جنوبی افریقہ کی ٹیم نے 9 اوورز میں 4 وکٹ پر 69 رنز بنالیے تھے، جس کے بعد میچ بارش کے باعث روک دیا گیا۔بارش رکنے کے بعد جب میچ کو دوبارہ شروع کیا گیا تو جنوبی افریقہ کی اننگز کو 14 اوورز تک محدود کردیا گیا، یوں اسے آخری 5 اوورز میں جیت کے لیے 74 رنز درکار تھے۔میچ دوبارہ شروع ہونے کے بعد پاکستانی بولرز نے نپی تلی گیند بازی کرتے ہوئے جنوبی افریقہ بلے بازوں کو مطلوبہ ہدف حاصل کرنے سے روک دیا۔

جنوبی افریقی ٹیم مقررہ 14 اوورز میں 9 وکٹوں کے نقصان پر 108 رنز ہی بناسکی۔بارش سے قبل پاکستانی بولرز نے جنوبی افریقا کی ہدف کے تعاقب کی کوشش کو آغاز میں ہی مشکل بنا دیا۔شاہین شاہ آفریدی نے پہلے ہی اوور میں کوئنٹن ڈی کاک کی وکٹ حاصل کی۔پاکستان کے لیے دوسری وکٹ بھی شاہین شاہ آفریدی نے حاصل کی، اننگز کے تیسرے اوور میں 16 کے مجموعی اسکور پر رائیلی رووسو 7 رنز بنا کر کیچ آؤٹ ہوئے۔جنوبی افریقا کی تیسری اور چوتھی وکٹ شاداب خان نے لی، انہوں نے ٹمبا باووما اور ایڈن مارکرم کو آوٹ کیا۔

ٹمبا باووما نے 36 اور ایڈن مارکرم نے 20 رنز بنائے۔
پاکستان ٹیم نے 185 رنز کیسے بنائے؟:اس سے قبل پاکستان نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا، ٹاپ آرڈر کی ناکامی کے بعد مڈل آرڈر میں شاداب خان اور افتخار احمد کی جارحانہ بیٹنگ کے باعث پاکستان ٹیم نے مقررہ اوورز میں 9 وکٹ پر 185 رنز بنائے۔سڈنی میں کھیلے جارہے میچ میں کپتان بابر اعظم اور وکٹ کیپر بیٹر محمد رضوان نے اننگز کا آغاز کیا۔بابر اور رضوان کی پارٹنرشپ کریز پر 4 بولز ہی قائم رہ سکی۔ جنوبی افریقی بیٹر نے 4 رنز پر محمد رضوان کو بولڈ کردیا۔ورلڈ کپ میں پہلا میچ کھیلنے والے محمد حارث نے تیسرے نمبر پر آکر جارحانہ بیٹنگ کرتے ہوئے 11 گیندوں پر 28 رنز بنائے۔ انہوں نے 3 چھکے اور 2 چوکے لگائے۔

انہیں پانچویں اوور میں 38 کے مجموعی اسکور پر نورکیا نے ایل بی ڈبلیو آؤٹ کیا۔ پاکستان کی تیسری وکٹ ربادا نے حاصل کی، جب کپتان بابر اعظم ایک مرتبہ پھر بیٹنگ میں ناکام ہوگئے اور 15 گیندوں پر 6 رنز بنا کر کیچ آؤٹ ہوگئے۔جنوبی افریقی بولر نورکیا نے پاکستان کی چوتھی وکٹ 43 رنز پر حاصل کی، شان مسعود 2 رنز بنا کر کیچ آؤٹ ہوئے۔محمد نواز اور افتخار احمد کی پارٹنرشپ کو 13 ویں اوور میں 95 کے اسکور پر توڑ کر تبریز شمسی نے جنوبی افریقا کے لیے پانچویں کامیابی حاصل کی۔اسپن بولر تبریز شمسی نے محمد نواز کو 28 رنز پر ایل بی ڈبیلو کیا۔محمد نواز کے آؤٹ ہونے کے بعد افتخار احمد اور شاداب خان کے درمیان بھی اچھی پارٹنرشپ قائم ہوئی۔ اس دوران شاداب خان نے جارحانہ انداز بھی اپنایا۔شاداب خان 22 گیندوں پر 52 رنز جبکہ افتخار احمد 35 گیندوں پر 51 رنز بناکر آؤٹ ہوئے۔حارث رؤف 3 اور محمد وسیم صفر پر آؤٹ ہوئے