ٹیرر فنڈنگ کرنے کا الزام میں محمد یٰسین کو اسپیشل سیل نے گرفتارکیا

798

نئی دہلی: دہلی پولیس اور جموں وکشمیر پولیس کے جوائنٹ آپریشن میں دہشت گرد تنظیم لشکر طیبہ اور البدر کے ٹیرر فنڈنگ (Terror Funding) کے لئے کام کرنے والے ایک حوالہ آپریٹر کو گرفتار کیا گیا ہے۔ دہلی پولیس کی اسپیشل سیل کی ٹیم نے دہشت گرد تنظیموں کے لئے حوالہ لین دین کرنے والے گرفتار شخص کی شناخت محمد یٰسین (48 سال)، باشندہ گلی نلبندن، ترکمان گیٹ، دہلی کے طور پر کی گئی ہے۔

محمد یٰسین پیشے سے گارمنٹ تاجر ہے اور دہلی کے مینا بازار سے کام کرتا ہے۔دہلی پولیس کے اسپیشل سیل کے اسپیشل کمشنر ایچ جی ایس دھالی وال کے مطابق اطلاع ملی تھی کہ جموں وکشمیر میں دہشت گردانہ سرگرمیوں کو بڑھاوا دینے کے لئے حوالہ منی کو دستیاب کروایا جارہا ہے۔ اس کو آپریٹ کرنے کا کام دہلی کے مینا بازار سے کام کرنے والا محمد یٰسین نامی شخص کر رہا ہے۔اس اطلاع کی بنیاد پر ایس پی للت موہن نیگی اور اے سی پی ہردے بھوشن کی نگرانی میں دہلی رینج کے اسپیشل سیل کے انسپکٹر سنیل کمار راجین اور انسپکٹر ہروندر جوشی کی قیادت میں ٹیم کی تشکیل کی گئی۔ جانکاری ملی کہ محمد یٰسین جو کہ باشندہ گلی نلبندن، ترکمان گیٹ، دہلی کا رہنے والا ہے، وہ دہشت گرد تنظیم لشکر طیبہ اور البدر کے ٹیرر فنڈنگ سے متعلق حوالہ لین دین میں ایک ایجنٹ کے طور پر کام کرتا ہے۔

اسپیشل سی پی دھالی وال نے بتایا کہ 17 اگست، 2022 کو محمد یٰسین نے تقریباً 10 لاکھ روپئے کی رقم جموں وکشمیر میں دہشت گردانہ سرگرمیوں میں آگے استعمال کے لئے جموں وکشمیر کے ایک دہشت گرد آپریٹیو عبدالحمید میر کو بھیجی ہے۔ اس سے متعلق، جموں وکشمیر پولیس نے 18 اگست کو ایف آئی آر نمبر 37/2022، ڈی ٹی کے تحت معاملہ درج کیا۔ اس کے بعد عبدالمید میر، باشندہ مینڈھر، پونچھ، جموں وکشمیر کو جموں بس اسٹینڈ سے 10 لاکھ روپئے کی ٹیرر فنڈنگ کے ساتھ گرفتار کیا تھا۔(بہ شکریہ نیوز18اردو)