نیوزی لینڈمیں سگریٹ خریدنے پر پابندی

125

ویلنگٹن: نیوزی لینڈ کی پارلیمنٹ نے انسداد سگریٹ نوشی کے نئے سخت ترین قوانین منظور کئے ہیں، جس کے تحت نئی نسل پر تمباکو خریدنے پر پابندی عائد کردی گئی۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق نئے قوانین کے مطابق یکم جنوری 2009 یا اس کے بعد پیدا ہونے والے کسی بھی شخص کو تمباکو فروخت کرنے پر ایک لاکھ 50 ہزار نیوزی لینڈ ڈالر تک کا جرمانہ عائد کیا جاسکے گا، یہ پابندی اس شخص کی پوری زندگی کے لئے ہوگی۔

رپورٹ کے مطابق تمباکو نوشی کی اشیا میں نیکوٹین کی مقدار کو کم کرنا بھی قانون کا حصہ ہے، جس سے تمباکو فروخت کرنے والوں کی تعداد میں 90 فیصد تک کمی ہو جائے گی۔

ایسوسی ایسٹ وزیر صحت ڈاکٹر عائشہ ویرال نے بیان میں بتایا کہ اس قانون کے بعد مستقبل کو تمباکو نوشی سے پاک کرنے میں نمایاں پیش رفت ہو گی۔انہوں نے کہا کہ ہزاروں لوگ طویل اور صحت مند زندگی گزار سکیں گے، جبکہ صحت کے نظام کو 5 ارب ڈالر کی بچت ہوگی کیونکہ تمباکو نوشی کی وجہ سے کینسر، دل کے دورے و دیگر بیماروں کا علاج نہیں کرنا پڑے گا۔