نئے سال میں آپ کی سیلری کا اسٹرکچر بدل سکتا ہے ۔ یعنی آپ کی بیسک سیلری میں الاونسیز کا کچھ حصہ بھی شامل ہوسکتا ہے ۔ اپریل 2021 سے لاگو ہونے والے نئے لیبر کوڈ کے بعد امپلائر آپ کی سیلری پیکج کی ری اسٹرکچرنگ کرسکتا ہے ۔ بتادیں کہ اگر سرکار ویج کی نئی تعریف کو لاگو کرتی ہے تو پی

ایف کنٹریبیوشن بھی بڑھ جائے گا ۔ پی ایف کنٹریبیوشن سے کمپنیوں کو اپنے سیلری انکریمنٹ بجٹ کا جائزہ لینا پڑسکتا ہے ۔ گریچویٹی اور لیو انکیشمنٹ جیسے پلانس میں اضافہ ہوسکتا ہے ، جس کی وجہ سے نئے رول کے تحت آپ کی ٹیک ہوم سیلری پر اثر پڑ سکتا ہے ۔

ذرائع کے مطابق اگلے سال سے سیلری کا نیا اسٹرکچر لاگو ہوسکتا ہے ۔ نئے اسٹریکچر کی بنیاد پر کسی بھی حالت میں آپ کی بیسک سیلری ، گراس سیلری کے 50 فیصد سے کم نہیں ہوسکتی ہے ۔ یعنی اپریل 2021 سے مجموعی سیلری میں بیسک سیلری کا حصہ 50

فیصد یا پھر اس سے زیادہ رکھنا ہوگا ۔ ایسے میں آپ کی بیسک سیلری اور پی ایف کنٹریبیوشن بڑھ جائے گا ، لیکن ٹیک ہوم سیلری میں کچھ کمی آسکتی ہے ۔ یہ نیا ویج رول آنے کے بعد سیلری اسٹرکچر میں بڑی تبدیلی دیکھنے کو مل سکتی ہے ۔

بینیفٹ پلان کا لیا جاسکتا ہے جائزہ

کمپنیاں مختلف ماڈل کے تحت اب اسٹاف کے بینیفٹ پلان کا جائزہ لے سکتی ہیں ۔ ان میں گریچویٹی اور لیو انکیشمنٹ جیسی چیزیں شامل ہیں ۔ درحقیقت جن کمپنیوں میں اسٹاف زیادہ طویل عرصہ تک کام کرتے ہیں ، وہیں گریچویٹی اور لیو انکیشمنٹ جیسی چیزیں سامنے آتی ہیں ۔

سمجھئے کس طرح ہوسکتی ہے تبدیلی

بجٹ 2021 میں پیش کردہ تجویز کے مطابق کمپنیاں اب اپنے کام کاج میں تبدیلی لانے کا موڈ بنا رہی ہیں ۔ اگر کوئی ادارہ تنخواہ کی تفصیلی تعریف اپنانا ہے ، تو اس کو پی ایف میں حصہ داری بڑھانی پڑ سکتی ہے ۔ پہلے پی ایف میں کنٹریبیوشن بیسک پر منحصر تھا ، اس میں بیسک پے کے ساتھ ڈی اے اور اسپیشل الاونس شامل تھے ۔

ہندوستان میں کمپنیوں میں کام کرنے والے اسٹاف کو حقیقت میں گراس سیلری کا 30 سے 50 فیصد بیسک پے دیا جاتا ہے ۔ اس کے ساتھ ہی باقی بھتے ملا کر اس کی سیلری کا اسٹرکچر پورا کیا جاتا ہے ۔ ایکسپرٹس کے مطابق کچھ کمپنیاں اپنے اسٹاف کی سیلری کا 50 فیصد بیسک پے کے طور پر ڈال سکتی ہیں ۔

کب کیا جائے گا لاگو

کوڈس آن مینیمم ویج کو منظوری مل چکی ہے اور سرکار نے ضابطے بنانے کا عمل شروع کردیا ہے ۔ ضابطے بنانے کے عمل کے ساتھ ہی بیسک سیلری میں الاونسیز کو بھی شامل کیا جاسکتا ہے ۔