اسلام آباد: پاکستان مسلم لیگ (ن) پارٹی کی نائب صدر اور سابق وزیر اعظم نواز شریف کی بیٹی مریم نواز کو عمران خان حکومت نے لندن میں علاج کرا رہے ان کے والد کے پاس جانے کی اجازت دینے سے انکار کر دیا ہے اور اس سلسلے میں ان کی عرضی کو بھی مسترد کر دیا ہے، روز نامہ ڈان کے مطابق پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان کے مشیر اور سینئر وکیل ڈاکٹر بابر اعوان نے اتوار کو اس معاملے پر کہا ’’مریم کا نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ (ای سی ایل) میں شامل ہے جس کی وجہ سے حکومت کے پاس ان کے بیرون ملک جانے کی عرضی کو مسترد کرنے کا حق ہے‘‘۔

انہوں نے کہا ’’ای سی ایل میں افراد کے نام ڈالنے سے متعلقہ ضابطے حکومت کو ان کا نام ’نو فلائی‘ فہرست سے ہٹانے کی اجازت نہیں دیتے‘‘۔ ڈاکٹر بابر نے کہا کہ وزیر قانون فروغ نسیم کی صدارت میں کابینہ کی سب کمیٹی نے مریم نواز کی عرضی کو مسترد کر دیا ہے ۔ انہوں نے اپنے والد کی دیکھ بھال کے لیے لندن جانے کی اجازت مانگی تھی، جن کا وہاں علاج چل رہا ہے۔

اس سے قبل حکمران پارٹی پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کی کور کمیٹی کی 18 دسمبر کی میٹنگ کے بعد وزیر اعظم کی خصوصی مشیر برائے اطلاعات ونشریات فردوس عاشق اعوان نے بھی کہا تھا کہ حکومت مریم کی درخوست کو قبول نہیں کرے گی۔ جس کے جواب میں مسلم لیگ (ن) کی ترجمان مریم اورنگزیب نے کہا کہ حکومت کے فیصلے سے کوئی حیرانی نہیں ہوئی ہے۔

عمران کی قیادت والی پی ٹی آئی کی حکومت ہمیشہ مسلم لیگ (ن) کی قیادت کو پریشان کرنے کے مواقع کی تلاش میں رہتی ہے۔ اس کے علاوہ اگر بیرون ملک جانے کی اجازت کے سلسلے میں مریم نواز عدالت میں چیلنج کرتی ہیں تو ان حالات میں پاکستان کی حکومت نے عدالت میں جانے کی بھی تیاری کر رکھی ہے۔

یہ ایک سینڈیکیٹیڈ فیڈ ہے ادارہ نے اس میں کوئی ترمیم نہیں کی ہے. – Source بشکریہ قومی آواز بیورو—-

ورق تازہ نیوز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں  https://t.me/waraquetazaonlineاور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔ 


اپنی رائے یہاں لکھیں