نندی گرام میں دھکا دینے کے ممتا بنرجی کے دعووؤں سے عینی شاہدین کا انکار

0 6

پوربا مدنی پور۔عینی شاہدین نے اس بات سے انکار کیا ہے کہ چہارشنبہ کے روز نندی گرام میں مغربی بنگال کی چیف منسٹر ممتا بنرجی کو کچھ لوگوں کے دھکا دیاہے۔ ایک عینی شاہد سومین میتی نے اے این ائی کو بتایاکہ”لوگ انہیں دیکھنے کے لئے جمع ہوگئے تھے۔

جب وہ روانہ ہونے والی تھیں‘ ان کے اردگر د لوگ جمع ہوگئے تھے۔ مگر کسی نے انہیں دھکا نہیں دیا۔ میں ایک طالب علم ہوں۔ میرے کسی بھی سیاسی جماعت سے تعلق نہیں ہے“۔

ایک او رعینی شاہد چترنجن داس نے اے این ائی کوبتایاکہ”میں وہاں پر تھا۔ وہ چلتے گاڑی میں بیٹھی ہوئی تھیں اور دروازہ کھلا تھا۔

ایک پوسٹر سے ٹکرانے کے بعد دروازہ بند ہوگیا۔ کسی بھی انہیں نہ دھکیلا اور نہ ہی مارا ہے۔ دروازہ کے قریب میں کوئی بھی نہیں تھا“۔

قبل ازاں بنرجی نے کہاکہ تھا کہ نندی گرام میں پیر کے روز کچھ نامعلوم لوگوں نے انہیں مبینہ طور پر دھکا دیاجس کی وجہہ سے وہ زخمی ہوگئی ہیں۔

بنرجی نے میڈیا کے لوگوں سے کہاتھا کہ ”جب میں اپنی کار کی قریب میں پہنچی توکچھ لوگوں نے مجھے دھکا دیا۔ مجھے چوٹ لگی‘ میرے پیر میں سوجن آگئی۔ میں درد میں ہوں۔ مجھے جانے دو۔

شدید درد کا شکار ہوں۔مجھے ڈاکٹر کے پاس جانا ہے“۔کلکتہ روانگی سے قبل انہوں نے مزیدکہاک”کوئی پولیس عہدیدار موجود نہیں تھے۔

عوام کی موجودگی میں چار سے پانچ لوگوں نے جان بوجھ کر میرے ساتھ ہاتھا پائی کی ہے۔ یہاں پر 4-5سے گھنٹوں کی پرہجوم عوامی موجودگی میں پولیس کا کوئی عہدیدار نہیں تھا۔ ایس پی بھی نہیں تھا۔ یقینا یہ ایک سازش ہے“۔

اٹھ مراحل میں مغربی بنگال کے اسمبلی انتخابات کرائے جارہے ہیں۔

سات کروڑ سے زائد رائے دہندے مغربی بنگال اسمبلی انتخابات میں اپنا حق رائے دہی استعمال کریں گے