ناندیڑ: 8مئی (ورق تازہ نیوز)طبی شعبہ سے وابستہ ایک 43 سالہ ڈاکٹر نے 14 سالہ لڑکی کے ساتھ جنسی زیادتی کی اور اسے حاملہ بنا دیا۔ ایڈیشنل سیشن جج ایس بی۔ ڈیگے نے ڈاکٹر کو 12 مئی تک پولیس کی تحویل میں بھیج دیا ہے۔ایک نابالغ لڑکی‘ وکاس وجے کمار سنکروار (43سال) کے اسپتال میں کام کرنے آرہی تھی۔ چار روز قبل جب لڑکی کے پیٹ میںدرد ہواتھا اسے علا ج کیلئے خانگی اسپتال گھر والے لے گئے لیکن اس وقت انھیں لڑکی کے چار ماہ کی حاملہ ہونے کی خبر ملی اور علاج کے دوران اس کا اسقاط حمل ہوا۔ یہ اطلاع بعد میں پولیس کو ملی۔

کنوٹ پولیس نے ڈاکٹر وکاس وجے کمار سنکروار (43سال) کے خلاف نومبر 2021 سے مارچ 2022 کے درمیان 14 سالہ لڑکی کے ساتھ جنسی زیادتی کرنے اور اسے حاملہ بنانے کے الزام میں مقدمہ نمبر 82/2022 تعزیرات ہند کی دفعہ 376 اور 506 اور جنسی استحصال سے بچوں کے تحفظ کے قانون کی دفعہ 4 اور 6 کے تحت درج کیا گیا ۔ انسپکٹر ابھیمنیو سولونکے کی رہنمائی میں یہ کیس سب انسپکٹر ہنمنت گھولے کو سونپا گیا۔ڈاکٹر وکاس سنکروار، جنہیں سب انسپکٹر ہنمنت گھولے، پولس ملازمین بھگوان مہاجن، پھڈ، قریشی اور دیگر نے 8 مئی کو گرفتار کیا تھا، کو عدالت میں پیش کیا گیا۔ ڈسٹرکٹ گورنمنٹ پراسیکیوٹر ایڈووکیٹ کے بعد جج ایس بی ڈیگے نے ڈاکٹر وکاس سنکروارکو 12 مئی 2022 تک پولیس کی تحویل میں دے دیا ہے۔