ناندیڑ:15. اپریل: (ورق تازہ نیوز) ڈاکٹر بابا صاحب امبیڈکر کی یوم پیدائش کے موقع پر نکالے گئے جلوس کے دوران سیڈکو احاطے میں ایک نوجوان کو مارنے اور ایک نوجوان پر حملہ کرنے کے الزام میں دو افراد کو گرفتار کرنے کے بعد ایک خصوصی عدالت نے دو افراد کو 19 اپریل تک پولیس کی تحویل میں دے دیا ہے۔

بلیرام پور میں ڈاکٹر بابا صاحب امبیڈکر جینتی جلوس کے آغاز کے بعد رات تقریباً 9 بجے جلوس نائیک کالج کے سامنے پہنچا اور ڈی جے کی دھن پر رقص کیا جا رہا تھا جس پر بلیرام پور کے نوجوان سچن عرف بنٹی تھورات نے کشور ٹھاکر اور شیخ عادل نست کہاکہ وہ جلوس سے باہر چلے جائیں۔ بحث تقریباً ایک گھنٹے تک جاری رہی۔ جائے وقوعہ پر کوئی پولیس موجود نہیں تھی اور جھگڑا بڑھ گیا۔

بالآخر کشور ٹھاکر نے چاقو نکالا اور سچن عرف بنٹی تھورات پر کئی وار کیے، جس سے وہ خون میں لت پت زمین پر گر کر ہلاک ہوگیا۔ اسے بچانے کی کوشش کرنے والے سومیدھ عرف بالا راجو واگھمارے کو بھی بری طرح پیٹا گیا ہے۔ اس وقت وہ ایک سرکاری اسپتال میں زیر علاج ہے۔ یہ مقدمہ 15 اپریل کو سہ پہر 3 بجے ناندیڑ دیہی پولیس اسٹیشن میں جرم نمبر 233/2022 اور تعزیرات ہند کی دفعہ 302، 307، 34 اور درج فہرست ذاتوں اور قبائل کے خلاف مظالم کی روک تھام ایکٹ، 1989 کی دفعہ 3 (2) (VA) کے تحت بھی جرم درج کیا گیا ۔

اس جرم کی تفتیش ڈاکٹر سدھیشور بھور، ڈپٹی سپرنٹنڈنٹ آف پولس، اتوارہ سب ڈویژن کو سونپی گئی۔ ڈاکٹر سدھیشور بھور اور ان کی ٹیم نے سخت محنت کی اور فوری اثر سے حملہ آور بلیرام پور میں رہنے والے کشور ٹھاکر اور شیخ عادل دونوں کو پکڑ لیا۔ دونوں کو 15 تاریخ کی صبح خصوصی عدالت میں پیش کیا گیا اور 19 اپریل 2022 تک چار دن کے لیے پولیس کی تحویل میں دیا گیا۔ مقتول سچن عرف بنٹی تھوراٹ کی آخری رسومات 15 اپریل کو سہ پہر 3 بجے سڈکو شمشان گھاٹ میں انتہائی سوگوار ماحول میں ادا کی گئیں۔