ناندیڑ۔21نومبر (ورق تازہ نیوز)نظم ونسق کو چیلنج کرنیوالے طاقتوں کو روکا جائے۔اس طرح کامطالبہ ونچیت بہوجن اگھاڑی کے ریاستی ترجمان فاروق احمد کی قیادت میں آج ایک وفد نے ناندیڑ کے ضلع ایس پی پرمود کمار شیواڑے کو ایک میمورنڈم پیش کرکے   کیا۔ متعلقہ ذمہ داران نے مزید مطالبہ کیا کہ ضلع ناندیڑ میں قانون و انتظام کی صورتحال کو جو چیلنج کرنے والی طاقتیں ہیں اُنھیں روکا جائے۔ میمورنڈم میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ 12 نومبر کو دیگلور ناکہ ناندیڑ میں احتجاج کے اختتام کے بعد گٹی کریشر راستہ پر پولیس پر پتھراو کا واقعہ رونما ہو۔ا جس کو ہندو مسلم فساد کا نام دے کر شہر ناندیڑ میں قانون و انتظام کی صورتحال کو بگارنے کے کوشش کچھ فرقہ پرست تنظیموں نے کی ۔

میمورنڈم میں الزام لگایا گیا کہ سوشیل میڈیا پر بھارتیہ جنتا پارٹی کے ذمہ داران کی جانب سے ناندیڑ کو امراوتی بنانے کی بات کہی جارہی ہے ۔ایسے میں کل یعنی بتاریخ 22نومبر 2021؁ء بروز پیرکے روز بی جے پی کی جانب سے دھرنا اندولن کا اعلان کیا گیا ہے۔ یاداشت میں ایس پی صاحب سے درخواست کی گئی ہے کہ شہر ناندیڑ کی امن وامان فضاء کو بگاڑنے کی کوشش اگر کوئی سیاسی جماعت یا پھرتنظیم کرتی ہے تو دھرنا آندولن کو رد کروایا جائے اور ان کے خلاف سخت قانونی کاروائی کی جائے ۔ تاکہ شہر کی امن و امان کی صورتحال برقرار رہ سکے۔ بہ صورت دیگر ایسا کچھ ہوتا ہے تو اس کی تمام تر ذمہ داری پولیس اور ضلع انتظامیہ پر رہے گی۔ اس موقع پر ونچیت بہوجن آگھاڑی کے ریاستی ترجمان فاروق احمد نے میڈیا سے مخاطب ہوکر کہا کہ پچھلے چند برسوں سے مسلسل شر پسند عناصر کی جانب سے اسلام اور نبی ﷺ کے شان میں شر پسند عناصر کی جانب سے گستاخانہ کلمات اداء کئے جارہے ہیں۔

جس کے سبب مسلمانوں کے دلی جذبات کو کافی ٹھیس پہنچ رہی ہے۔ اسی طرح کے چند شر پسند عناصر کی جانب سے حال ہی کے دنوں میں مہاراشٹر کے بیشتر اضلاع بالخصوص ناندیڑ میں بھی دو سماج کے درمیان میں فساد برپا کرنے کی منظم سازش رچی گئی تھی۔ لیکن پولیس محکمہ نے بروقت کاروائی کرتے ہوئے شر پسند عناصر کے منصوبوں پر پانی پھیر دیا۔ آپ نے مزید کہا کہ ونچیت بہوجن آگھاڑی کے قومی صدر ڈاکٹر پرکاش امبیڈیکر نے پہلے ہی ودھان سبھا میں ایک آرڈنینس پاس کئے جانے کا مطالبہ کیا ۔ جس میں نفرت انگیز کلمات بیانات کہہ والے اشخاص کے خلاف میں سخت سے سخت قانونی کاروائی کئے جانے کا مطالبہ کیا۔ اسی طرح ونچیت بہوجن آگھاڑی نے ہی سب سے پہلے اس طرح کے سماج میں تفریق پیدا کرنے والے شر پسند عناصر کے خلاف میں 5سے 7سا ل کی سخت سزاء دیے جانے کا مطالبہ کیا۔ اسی طرح ونچیت بہوجن آگھاڑی کی جانب سے ہی مسلمانوں کو 5فیصد ریزویشن جلد از جلد دیے جانے کا مطالبہ کیا جارہا ہے۔ فاروق احمد نے ضلع ایس پی سے ملاقات کرتے ہوئے ناندیڑ میں قانون و انتظام کی صورتحال کو بگاڑنے والے فرقہ پرستوں کے خلاف میں سخت سے سخت قانونی کاروائی کئے جانے کامطالبہ کیا۔ اس موقع پر ونچیت بہوجن آگھاری کے ریاستی ترجمان فاروق احمد ، وٹھل گائیکواڑ(ونچیت بہوجن آگھاڑی حلقہ جنوب کے شہر صدر)، ایوب خان پٹھان(ونچیت بہوجن اگھاڑی حلقہ شمال کے شہر صدر )، امروت نرگلکر، اُتم دھرم کارو دیگر کئی ذمہ داران موجود تھے۔یاداشت کی کاپی ضلع کلکٹر اور اسپیشل آئی جی پولیس کو بھی دی گئی ہے۔

 

ورق تازہ نیوز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں  https://t.me/waraquetazaonlineاور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔