ناندیڑ : 22 نومبر (ورق تازہ نیوز ) ریاست کے تین مقامات پر رونما ہوئے کچھ ناخوشگوارواقعات کے بعد بی جے پی نے ریاست بھر میں 22نومبر کو تمام ضلع کلکٹر دفاتر کے روبرو احتجاجی دھرنا منعقد کرنے کا فیصلہ کیا تھا

آج ناندیڑ میں بھی صبح گیارہ بجے ضلع کلکٹر آفس کے روبرو دھرنار دیا گیا جس میں امراوتی کے بی جے پی لیڈر وسابقہ ریاستی وزیر ڈاکٹرانیل بونڈے نے شرکت کی۔ اور مسلمانوں کے خلاف زہر افشائی کی۔

آج ناندیڑشہر کے علاوہ ریاست بھر میں بی جے پی نے حالیہ دنوں رونماہوئے ناخوشگوار واقعات کی مذمت میں دھرناآندولن رکھاتھا ۔ناندیڑ میں امراوتی سے بی جے پی کے سابقہ وزیرڈاکٹرانیل بونڈے آئے تھے ۔جنہوں نے آج اپنی تقریر میں مسلمانوں کے خلاف کافی زہر اُگلا اور رضا اکیڈیمی پر پابندی عائد کرنے کامطالبہ کرتے ہوے ناندیڑمیں رونماہوئے تشدد کےلئے اشوک راو چوہان ریاستی وزیر کوہی ذمہ دار ٹھہرایا ہے۔اور معاملے کی ہائی کورٹ کے ریٹائرڈجج کے معرفت عدالتی تحقیقات کروانے کامطالبہ کیا ۔

بونڈے نے کہا کہ ناندیڑمیں 12نومبر کے بند سے قبل دیگلورناکہ علاقہ میں ایک مولوی نے اشتعال انگیز تقریر کی جو سوشل میڈیا پروائرل ہوگئی جس کے بعد ہی دوسرے دن ریاست کے مالیگاوں ‘امراوتی اورناندیڑمیں تشدد کی وارداتیں ر ونما ہوئیں۔اس لئے اس مولوی کوفی الفور گرفتار کرنے کی ضرورت ہے مگر کانگریس کے لیڈران اس مولوی کو پناہ دے رہے ہیں اس طرح کا الزام بونڈے نے عائد کیا ۔انھوں نے تقریرکے بعداخباری نمائندوں سے بات چیت میں یہ دعویٰ کیا کہ ناندیڑ کے کچھ مذہبی مقامات پر اسلحہ کاذخیرہ ہے جسے ضبط کیاجاناچاہئے ۔ناندیڑکاتشد د منصوبہ بندتھاجس کےلئے پہلے سے منصوبہ بندی کی جارہی تھی ۔پولس مجھے اشتعال انگیزبیان دینے سے روک رہی تھی لیکن اس مولوی کو کیوں نہیں روکاگیا؟ اس طرح کاسوال بھی انھوںنے محکمہ پولس سے پوچھا ۔اس کے علاوہ بھی بونڈے نے کئی بے بنیاد الزامات بھی رضا اکیڈیمی ومسلمانوں پرعائد کئے ہیں ۔آج کے دھرنے میں بی جے پی کے ایم پی پرتاپ پاٹل چکھلی کر ‘ یم ایل سی رام پاٹل راتولی کر ‘ ایم ایل اے تشاراٹھوڑ‘ دیپک سنہہ راوت ‘ملنددیشمکھ ‘ کے علاوہ دیگر ورکرس بھی موجودتھے۔اس موقع پر پولس کے خصوصی انتظامات رکھے گئے تھے ۔

ورق تازہ نیوز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں  https://t.me/waraquetazaonlineاور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔