ناندیڑ:25 مارچ(ورق تازہ نیوز) ناندیڑشہر کی آبادی میں دن بدن اضافہ ہوتاجارہا ہے جس کی وجہہ سارے شہر میں ٹرافک نظام درہم برہم ہوکررہے گیا ہے۔ بالخصوص قدیم شہر کے قدیم مونڈھاتا دیگلور ناکہ تک ٹرافک نظام پوری طرح ناکام ہے ۔ جسکا خمیازہ ٹووہیلر اورفور وہیلر گاڑی مالکان کا جرمانے کی صورت میں اٹھانا پڑرہا ہے۔ کیونکہ ان علاقوں میں سڑکوں کے کنارے اور پارکنگ زونس پر غیر مجاز قبضہ جات ہوجانے سے ان گاڑی مالکان کو اپنی گاڑیاں پارکنگ زون کے بجائے سڑکوں کے کنارے کھڑا کرنا پڑرہا ہے اور جب ٹرافک پولس کی گاڑی آتی ہے تو ان گاڑی مالکان پر نو پارکنگ کا جرمانہ عائد کردیتی ہے ۔

قدیم شہر میںروزانہ بڑے پیمانے پرا س طرح کی جرمانے کی کاروائیاں انجام دی جارہی ہیں جس سے گاڑی مالکان برہم ہے ۔ان کا کہنا ہے کہ پہلے تو قدیم شہر میں پارکنگ زون کاکوئی نظم نہیں ہے ۔جہاں پر زونس بنائے گئے ہیں وہاں پر پوری طرح غیر مجاز قبضے ہوچکے ہیں جس کی طرف ٹرافک پولس جان بوجھ کرکوئی توجہ نہیں د ے رہی ہے قدیم شہر میں ٹرافک اور پارکنگ نظام کوبہتر بنانے کیلئے پولس کو خصوصی توجہ دینے کی ضرورت ہے ۔ سڑکوں پر پارکنگ زونس میں ہاتھ گاڑے والے کھڑے ہیں جبکہ دوکانوں کے سامنے خود کئی دوکانداروں نے اپنے سامان رکھ دئےے ہیں جس کی وجہہ سے یہاں پر گاڑیوں کی پارکنگ کا مسئلہ کافی سنگین بنا ہوا ہے ۔

اس علاقہ میں ہاکرس زون نہ ہونے سے بھی گاڑے والے اپنے کاروبار کیلئے پارکنگ زونس میں گاڑے لگا رہے ہیں۔ اس جانب ٹرافک پولس کو فی الفورتوجہ دینے کی ضرورت ہے ورنہ مستقبل قریب میں پارکنگ کے مسئلہ پر کوئی ناخوشگوارواقعہ بھی رونما ہوسکتا ہے جس کیلئے ٹرافک پولس ذمہ دار رہے گی۔قدیم شہر کے گاڑی مالکان کا کہنا ہے کہ ٹرافک پولس کے افسران کچھ دیر کیلئے یہاں آئے اور علاقہ کاسروے کرکے یہ معلومات حاصل کریں کہ ان علاقوں میں گاڑی مالکان اپنی گاڑیاں کہاں کھڑے کریں؟کیا انکے کیلئے کوئی پارکنگ زون بنایاگیا ہے ؟ گاڑی مالکان کا کہنا ہےکہ جب وہ ان علاقوں میں خریدی کیلئے آتے ہیںتو پارکنگ زون میں ہی غیر مجا زقبضہ ہونے کی صورت میں انھیں مجبوراً سڑک کے کنارے اپنی گاڑیاں پارک کرنی پڑتی ہے۔ اور ایسے میںٹرافک پولس اس مجبوری کوجانے بغیر ان گاڑی والوں کوآن لائن جرمانے کی رسید بھیج رہے ہیں جو سراسرنہ انصافی ہے ۔ ان مسائل پر پولس کے اعلیٰ حکام اور اتوارہ پولس کے پی آئی کو بھی سنجیدگی سے توجہ دینے کی ضرورت ہے۔