ناندیڑمیں الیکٹرک گاڑیوں میں غیر مجاز تبدیلیاں نہ کریں‘گاڑیوں کا خصوصی معائنہ

0 5

ناندیڑ:20مئی (ورق تازہ نیوز) حکومت مہاراشٹر نے پوری ریاست میں ماحول دوست پالیسی نافذ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ اسی مناسبت سے مہاراشٹر الیکٹرک وہیکل پالیسی 2021 نافذ کی گئی ہے۔ پالیسی کے مطابق ای بائک اور ای گاڑیاں ٹیکس سے مستثنیٰ ہیں۔ ریجنل ٹرانسپورٹ ڈپارٹمنٹ کے مطابق ریاست میں 66 ہزار 482 گاڑیاں رجسٹرڈ کی گئی ہیں اور ناندیڑ ضلع میں کل 887 الیکٹرک گاڑیاں رجسٹر کی گئی ہیں۔گاڑیوں کے مینوفیکچررز، ڈسٹری بیوٹرز اور شہری ایسی گاڑیوں میں غیر مجاز تبدیلیاں نہ کریں اور اگر ایسی گاڑیوں میں غیر قانونی تبدیلیاں کی جائیں تو انہیں فوری طور پر تبدیل کر دیا جائے۔

شہریوں کی حفاظت کے لیے ریاست کے تمام اضلاع میں ایسی گاڑیوں کے مینوفیکچررز اور ڈیلروں کے ساتھ ساتھ ایسی گاڑیاں بنانے والوں اور بیچنے والوں کے خلاف خصوصی جانچ شروع کی جائے گی۔ تمام علاقائی ٹرانسپورٹ افسران اور سب ریجنل ٹرانسپورٹ افسران کو موٹر وہیکل ایکٹ 1988 کے ساتھ ساتھ متعلقہ گاڑیوں کے مینوفیکچررز، گاڑیوں کے تقسیم کاروں اور گاڑیوں کے مالکان کے خلاف تعزیرات ہند کے تحت پولیس اسٹیشن میں شکایت درج کرنے کی ہدایت دی گئی ہے۔ سب ریجنل ٹرانسپورٹ آفس نے گاڑیاں بنانے والوں، ڈیلرز اور شہریوں سے اس بات کا نوٹس لینے کی اپیل کی ہے۔کچھ کار ساز ادارے کسی تسلیم شدہ تنظیم کے سرٹیفکیٹ کے بغیر ای بائک فروخت کرتے ہیں۔

اس کے علاوہ، ایسی گاڑیوں کی بیٹری کی صلاحیت کو 250 واٹ سے زیادہ کرنے یا رفتار کی حد کو 25 کلومیٹر فی گھنٹہ سے زیادہ کرنے کے لیے جن ای بائک کو گاڑیاں بنانے کی منظوری دی گئی ہے، ان میں غیر قانونی طور پر تبدیلی کی گئی ہے۔ چونکہ ایسی گاڑیاں اصل میں رجسٹرڈ نہیں ہوتیں اس لیے انہیں ڈرائیونگ لائسنس کی بھی ضرورت نہیں ہوتی۔ لہذا، اس طرح کی غیر قانونی تبدیلیوں کے ساتھ گاڑیوں کی فروخت سے سڑک کی حفاظت کو سنگین خطرہ لاحق ہونے کا امکان ہے۔ ای بائک میں آگ لگنے اور حادثات کا سبب بننے کی بھی اطلاعات ہیں۔ اس سلسلے میں شہریوں کو اس بات کو یقینی بنانا چاہیے کہ گاڑی مجاز ادارے کے منظور کردہ معیارات کے مطابق ہے اور ایسی گاڑیاں خریدنے سے پہلے متعلقہ گاڑیوں کے ڈسٹری بیوٹرز اور مینوفیکچررز کو اس بات کو یقینی بنانا چاہیے کہ ان کے پاس منظور شدہ باڈی کی ٹائپ اپروول ٹیسٹ رپورٹ اور اس کی کاپی موجود ہو۔