ناندیڑمیں دو افراد کی تحویل سے پستول اورزندہ کارتوس برآمد

276

ناندیڑ:10اگست (ورق تازہ نیوز) وزیر آباد کرائم تحقیقاتی  اسکواڈ نے ڈی گینگ کے ایک مجرم کو گرفتار کر کے اس کے قبضے سے ایک دیسی پستول، دو زندہ کارتوس برآمد کر لیے۔ اس کے علاوہ ایک اور نوجوان سے ایک جدید پستول اور 10 زندہ کارتوس اور ایک میگزین برآمد کیا گیا ہے۔وزیرآباد کے پولیس سپرنٹنڈنٹ جگدیش بھنڈاروار کی طرف سے موصول ہونے والی اطلاع کے مطابق ڈی گینگ کے مجرم اپنی دشمنی کو ہوا دینے کے لیے اپنے پاس پستول لے گھوم رہے ہیں۔

وزیرآباد کرائم انویسٹی گیشن ٹیم اس تناظر میں تلاشی کے دوران ایک نوجوان پر نظر رکھے ہوئے تھی۔ پولیس نے ایک نوجوان کو چکھل واڑی سے ابچل نگر جانے والی سڑک پر دیکھا۔ پولیس کو دیکھتے ہی وہ بھاگنے لگا۔ پولیس نے اس کا پیچھا کیا اور اسے پکڑ لیا۔ اس کا نام روی عرف راوی لالہ نارائن سنگھ ٹھاکر تھا۔ وہ ڈی گینگ کا رکن تھا۔ اس کے قبضے سے ایک دیسی پستول اور دو زندہ کارتوس برآمد ہوئے۔ اسسٹنٹ پولیس انسپکٹر سنجے نیلاپتریوار کی شکایت پر روی عرف روی لالہ نارائن سنگھ ٹھاکر کے خلاف انڈین آرمس ایکٹ کی دفعہ 3/25 کے تحت مقدمہ نمبر 278/2022 درج کیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ گشت کے دوران کرائم انویسٹی گیشن ٹیم نے آنند عرف چنو سردار یادوساکن راوی نگر کوٹھا کو بوربن فیکٹری کے قریب سے گرفتار کر لیا۔

تلاشی لی گئی اور اس کے قبضے سے ایک جدید پستول، دس زندہ کارتوس اور ایک میگزین برآمد ہوا۔ پولیس افسر گجانن کیڈے کی شکایت پر وزیر آباد تھانے میں مقدمہ نمبر 280/2022 درج کیا گیا ہے۔پولیس سپرنٹنڈنٹ پرمود شیوالے، ایڈیشنل سپرنٹنڈنٹ آف پولیس نلیش مورے، لوکل کرائم برانچ کے پولس انسپکٹر دوارکاداس چکھلیکر، وزیرآباد پولیس اسٹیشن کے کرائم انویسٹی گیشن ٹیم کے افسر سنجے نیلاپتریوار، پولس کانسٹیبل وجے کمار نندے، گجانن کیڑے، منوج سندرو پردیو، بیلوچندرا، پولس کانسٹیبل، شیخ عمران، رمیش سوریاونشی، وینکٹ گنگولوار، بالاجی کدم کی تعریف کی گئی ہے۔