ناندیڑ:مولانا کلیم صدیقی کی گرفتاری کی مذمت میں منعقدہ احتجاج کے ذمہ داران سمیت300افراد کے خلاف مقدمہ درج

2

ناندیڑ: 30 ستمبر۔(ورق تازہ نیوز)ناندیڑشہر میں داعی اسلام حضرت مولانا کلیم صدیقی کو یوپی اے ٹی ایس کی جانب سے بلاوجہہ گرفتار کئے جانے کی مذمت میں ناندیڑ شہر کے ضلع کلکٹرآفس کے روبرو 24 ستمبر کودوپہر بعد نماز جمعہ احتجاجی مظاہرہ منعقد کیا گیا تھا ۔

جس میں بڑی تعدادمیں مسلمانوں کے علاوہ ہم وطنوں نے بھی شر کت کی تھی ۔یہ دھرنا آل انڈیا امام کونسل کے زیراہتمام رکھاگیاتھا جسے تمام مذہبی وسیاسی و سماجی تنظیموں کی مکمل تائیدو حمایت حاصل تھی ۔

اس معاملے میں وزیر آباد پولس اسٹیشن نے دھرنے کے ذمہ داران سمیت 250 تا 300 افراد کے خلاف مختلف دفعات کے تحت مقدمہ کااندراج کیا ہے ۔

وزیر آباد پولس کے کانسٹیبل بالاپرسادکاشی ناتھ کی شکایت پر تعزیرات ہند کی دفعہ 188‘ 270 ‘341‘ 34 اور مہاراشٹر کوویڈ ایکٹ 2020کی دفعہ 11‘ ڈیزاسٹرمینجمنٹ ایکٹ کی دفعہ 51( B)او ر مہاراشٹر پولس ایکٹ کی دفعہ 135کے تحت نامزد افراد

مفتی حنیف احرار ‘ حفیظ محمد صدیقی‘ ناصر خطیب ‘ مولاناایوب قاسمی ‘ ایڈوکیٹ عبدالرحمن صدیقی ‘ عابد علی محبوب علی ‘ عبدالندیم عبدالواحد‘ ابراہیم خان رحیم خان ‘احمد ندیم محمد ابراہیم ‘سید ضیاء الدین سید شجاعت الدین‘ عطاء الرحمن ‘شیخ نثار‘ عتیق الرحمن ‘ شفیر احمد‘ فیروز پاشاہ چاند پاشاہ‘ سید نظیر‘ شیخ اعجاز‘ کامریڈ گنگادھر گائیکواڑ سمیت 250 تا 300 افراد کے خلاف مقدمہ کا اندراج کیا گیا ہے ۔