ناندیڑ:لاج میں خاتون ڈاکٹر نے خودکشی کر لی

ناندیڑ:24 مارچ(ورق تازہ نیوز)آج 24 مارچ کی شام کو شہر کے ایک ریلوے اسٹیشن کے سامنے پنجاب لاج میں ایک خاتون ڈاکٹر نے خودکشی کرلی۔ تادم تحریر وزیر آبادپولس اسٹٰیشن میں حادثاتی موت کے اندراج کی کارروائی جاری تھی۔موصولہ اطلاع کے مطابق ڈاکٹر ودیا امول سنکواڑ (33سال) نے 22 مارچ کو ریلوے اسٹیشن کے سامنے پنجاب لاج میں ایک کمرہ لیا تھا۔ 23 مارچ کی صبح وہ اٹھی، باہر گئی اور دوبارہ اپنے کمرے میں ٹھہر گئی۔ وہ آج 24 مارچ کی صبح نہیں اٹھی۔

اس نے اپنے کمرے کا دروازہ نہیں کھولا تو لاج کی انتظامیہ نے دروازے کی گھنٹی بجائی۔ پھر بھی کوئی جواب نہیں ملا۔ کچھ دیر بعد لاج انتظامیہ نے دوبارہ کوشش کی لیکن کوئی جواب نہ آیا، پنجاب لاج انتظامیہ نے وزیرآباد پولیس کو اس بارے میں آگاہ کیا۔اطلاع ملتے ہی انسپکٹر جگدیش بھنڈاروار، ان کے ساتھی اور پولیس افسران موقع پر پہنچ گئے۔ پولیس نے دروازہ توڑ کر اسے کھولا اور حالات کے مطابق ایسا معلوم ہوتا ہے کہ ڈاکٹر ودیا سنکواڑ کے پاس ایک بیگ تھا۔ اس میں ایک نئی نایلان ڈوری تھی۔ کئی ادویات تھیں۔ اس کے جسم پر زخم بھی کٹر سے بنائے گئے ہیں۔ اس کی گردن کی رگ، اس کے ہاتھ کی رگ، لگتا ہے کٹ گئی ہے۔

کٹر متوفی ڈاکٹر کے ہاتھ میں تھا۔ لاش ایسی حالت میں ملی۔موصولہ اطلاعات کے مطابق ڈاکٹر ودیا کے شوہر بھوکر میں ڈاکٹر ہیں۔ ڈاکٹر جوڑا بھوکر میں رہتا ہے۔ ان کا ایک 5 سے 6 سال کا بیٹا ہے۔ ڈاکٹر ودیا کی ماں، دادا اور بھائی ناندےڑ شہر کے فراندے نگر علاقے میں رہتے ہیں۔تادم تحریراس سلسلے میں حادثاتی موت کے اندراج کی کارروائی جاری تھی۔