اتوارہ پولس نے سات نوجوانوں کوگرفتار کرلیا
ناندیڑ:3فروری ۔(ورق تازہ نیوز) 27 جنوری کو رات کے اندھیرے میں کچھ لوگوں نے لگاتار چھ گھنٹے تک تین افراد کو رسی سے باندھ کر مارا پیٹا۔ محمد واجد قریشی ، محمد بابو قریشی کی طرف سے درج شکایت کے مطابق وہ اور عظیم الدین ڈ یلکس فکشن ہال دیگلورناکہ کے سامنے 27 جنوری کی شب ساڑھے آٹھ بجے ٹھہرے ہوئے تھے۔اس وقت ایوب محمد جان ایوب جبار اقبال ایک کار میں آئے اور ہمیں لے کر دریائے گوداوری گئے۔

ندی کے کنارے محمد عامر ، عمران منان ایوب کا بھائی ، ایوب کا نوکر اور ایک دوسرا شخص تھا۔ اس وقت وہاں موجودلوگوں نے لوہے کی راڈ‘گاڑی کے شاک اپ اورلکڑیوں سے شدید مارپیٹ کی اسکے بعد میرے دوست رضوان قریشی کو بلایا گیا اور اسے بھی مارا گیا۔مارپیٹ مسلسل تین گھنٹوں تک جاری تھی۔ حملہ آوروں ہی نے واقعے کی ویڈیو بنائی تھی۔ جو بعد میں وائرل ہوئی ۔ویڈیو میں حملہ آور یہ بھی کہہ رہے ہیں انھیں بعد میں کیاکہنا ہے۔

مسلسل تین گھنٹوں کو نوجوانوں کو فلمی اسٹائل میں قید کرکے مارپیٹ کے اس واقعہ سے اندازہ ہوتا ہے کہ شہر میں غنڈہ گردی کس حد تک بڑھ گئی ہے

۔اتوارہ پولس اسٹیشن میںواجد قریشی کی شکایت پر تعزیرات ہند کی دفعہ 326 ، 323 ، 506 ، 143 ، 147 ، 148 اور 149 کے تحت مقدمہ نمبر 20/2021 درج کیا ہے۔ ایف آئی آر میں محمد ایوب ، ایوب جبار ، محمد عامر ، عمران منان ، محمد ایوب کے بھائی ، محمد ایوب کے نوکراور ایک اورشخص سمیت سات افراد کے خلاف مقدمہ درج کیاگیاہے

اس واقعہ کی تفتیش پی آئی صاحب راو نرواڑے کررہے ہیں۔ پولس نے اب تک پانچ ملزمین کوگرفتاربھی کیاہے ۔ان تمام ملزمین کاتعلق بھی دیہی پولس اسٹیشن حدود کے علاقہ یعنی سے قدیم شہر کے دیگلورناکہ سے متصل علاقوں سے بتایاجاتا ہے ۔