ناندیڑشہر میں رات گیارہ بجے کے بعدپولس کا”ڈنڈاراج“

782

ناندیڑ:28ڈسمبر ( ورقِ تازہ نیوز)شہر ناندیڑمیں چند سال قبل ایس پی شاہ جی اماپ نے اور پھر ایس پی رویندرسنگھل اور ڈی واے ایس پی منوج کمار شرمانے جرائم پیشہ افراد میں اپنی اچھی دھاک بیٹھائی تھی ۔ان افسران کے بعد شائد ہی ایسے افسر ناندیڑ شہر وضلع کو ملیں ہوں گے جن سے جرائم پیشہ افراد ڈرتے ہیں ۔لیکن فی الحال نئے ایس پی شری کرشناکوکاٹے نے رات گیارہ بجے کے بعدشہر میں بلاوجہہ گھومنے پھیرنے اورغیر مجازطور پر ہوٹلوں اوردیگر کاروباریوں کے خلاف زبردست مہم شروع کی ہے۔

جس کی وجہہ سے شہر میں تقریبا ایک ماہ سے پولس کی سخت کاروائی سے شہری حدودمیں جرائم میں کچھ کمی نظر آرہی ہے ۔ رات تقریبا دس بجے کے بعد تمام پولس اسٹیشنوں کی حدودکے کاروبار کو بند کروایاجارہا ہے اور رات گیارہ بجے کے بعد گاڑیوں پر بلاوجہہ گھومنے والوں کوپولس کے ڈنڈوں کا مہا پرساد بھی مل رہا ہے۔

اس طرح ناندیڑ شہر میں پولس کا” ڈنڈا راج “ چل رہا ہے۔ایس پی کا یہ اقدام قابل تعریف ہے ۔واضح رہے کہ ناندیڑشہر کے کچھ علاقوں میںرات میں ہوٹلوں اورپان ٹپریوں کاکاروبار رات بھر جاری رہنے کی اطلاع ایس پی کوکاٹے کو ملی ۔اس کے علاوہ ان علاقوں میں رات کے وقت جرائم میں بھی اضافہ ہورہاتھا ۔

ہوٹلوں اور پان ٹپریوں کے سامنے جھگڑے ہونا عام بات ہوگئی تھی۔ان تمام باتوںپرغور کرتے ہوئے ایس پی کوکاٹے نے رات گیارہ بجے کے بعد ڈنڈا راج شروع کردیا ہے اور کسی بھی کاروبارکو رات گیارہ بجے سے پہلے بند کروایاجارہا ہے۔ بالخصوص قدیم شہر کے اتوارہ بازار اور دیگلورناکہ علاقوں میں جاری رہنے والی ہوٹلوں کے خلاف سخت کاروائی کی جارہی ہے۔پولس کے اس اقدام کاشہریان استقبال کررہے ہیں اوراس پر ہمیشہ عمل درآمد جاری رکھنے کی توقع کی جارہی ہے۔