ممبئی:(ورق تازہ نیوز)ناندیڑ کے شانتی نگر میں8 جنوری کی رات میں ہوئے ڈیٹونیٹر دھماکہ معاملے میں پولیس کی تفتیش پر عدم اطمینان ظاہر کیا جارہاہے۔اور اس دھماکہ کی اعلی سطحی جانچ کی مانگ کی جارہی ہے۔اس سلسلہ میں ناندیڑ کے مقامی افراد کے ایک وفد نے آج ممبئی کا دورہ کیا۔یہاں اس وفد کے ذمہ داران نے ریاست کے وزیر داخلہ اور پولیس کے ڈی آئی جی سے نمائندگی کرنے کی غرض سے سماج وادی پارٹی کے ایم ایل اے ابو عاصم اعظمی سے ان کے مکان پر ملاقات کی اور انہیں ایک تحریری طورپر خط ریاست کے وزیر اعلی اور وزیر داخلہ کے نام پیش کیا۔

ابو عاصم اعظمی کو ناندیڑ کے شانتی نگر میں ہوئے ڈیٹونیٹر دھماکہ کی ساری تفصیلات بتائیں اور اس معاملے میں پولیس کی جانب سے کی جارہی تفتیش پر بھی سوالات کھڑے کئے اس پر عدم اطمینان ظاہر کیا اور اس دھماکہ کی اعلی سطحی جانچ کولیکر وزیر اعلی ،وزیر داخلہ اور پولیس کے ڈی آئی جی سے نمائندگی کرنے کی گذارش کی۔ابو عاصم اعظمی نے ناندیڑ کے مقامی ذمہ دران کے وفد کو یقین دلایا کہ اس معاملے میں جلد ہی وہ وزیر داخلہ دلیپ ولسے پاٹل اور پولیس کے ڈی آئی جی سے شخصی طورپر ملاقات کریں گے اور ناندیڑ کے شانتی نگر دھماکہ کی غیر جانب دارانہ جانچ کے لئے احکامات جاری کرنے کی مانگ کریں گے۔

ناندیڑ کے وفد میں شامل اراکین نے اپنی گفتگو میں اس بات کی طرف بھی نشاندہی کروائی کہ سابق میں2006 میں ناندیڑ کے پاٹ بندھارے نگر میں مبینہ بم سازی کے دوران بم دھماکہ ہوا تھا جس میں دو لوگوں کی موت ہوگئی تھی اور تین افراد زخمی ہوئے تھے۔دھماکہ میں شامل افراد کا تعلق بجرنگ دل اور وی ایچ پی سے ثابت ہوگیا تھا۔سابق میں پیش آئے دھماکہ کی طرح ہی یہ بھی دھماکہ کسی بڑی سازش کا حصہ ہونے کا اندیشہ ظاہر کیا .