ناندیڑ:22؍مارچ ( ورق تازہ نیوز)ناندیڑ سے امرتسر جانے والی سچکھنڈ ایکسپریس کو ریلوے محکمہ کی جانب سے سہواً ایک ریزرو ڈبہ لگانا بھول گیا۔ جس کی وجہہ سے مسافرین میں برہمی پیدا ہوگئی اور انہوں نے ریلوے اسٹیشن پر ریل روک کر زوردار احتجاج کیا۔ تفصیلات کے مطابق سچکھنڈ گردوارہ کے درشن کرنے کے لیے ناندیڑ شہر میں آئے ہوئے سکھ عقیدت مندوں نے سچکھنڈ ایکسپریس ناندیڑ ہجور صاحب۔ امرتسر ریلوے میں S9 ڈبہ نہ لگانے پر روک دی۔ جی آر پی اور آر پی ایف کے علاوہ ریلوے انتظامیہ نے ثالثی کرتے ہوئے تقریباً دیڑھ گھنٹہ کے بعد ٹرین امرتسر روانہ کی۔

سچکھنڈ گردوارہ کے درشن کرنے کے لیے ہولی کے موقع پر دہلی، امرتسر، پنجاب علاقوں سے بڑے پیمانے پر عقیدت مند ناندیڑ میں آتے ہیں۔ آج منگل 22؍مارچ کو کئی عقیدت مند سچکھنڈ گردوارہ کے درشن اور ہلہ بول جلوس کے اختتام کے بعد اپنے اپنے شہروں کو لوٹ رہے تھے۔ ان میں سے چند عقیدت مندوں نے چار ماہ قبل ہی ریلوے کے کنفرم ٹکٹ حاصل کیے تھے۔ تاہم آج جب ناندیڑ ریلوے اسٹیشن پر سچکھنڈ ایکسپریس کو S9 ڈبہ ریلوے انتظامیہ کی جانب سے سہواً نہیں لگائے جانے پر وہ برہم ہوگئے۔ مسافرین نے الزام عائد کیا ہے کہ جب ریلوے حکام کو مذکورہ سنگین غلطی کی اطلاع ملی تو وہ کوئی اطمینان بخش رد عمل ظاہر نہیں کیے اور نہ ہی ڈبے کو جوڑنے سے متعلق کسی قسم کی معلومات دینے کو تیار ہوئے۔

جس سے برہم ہوکر عقیدت مند اور مسافرین نے آر پی ایف آفس کے سامنے پلیٹ فارم نمبر 1 پر سچکھنڈ ایکسپریس روک دی اور مطالبہ کیا کہ جب تک ڈبہ لگایا نہیں جاتا تب تک ٹرین کو چھوڑنے نہیں دیا جائے گا۔ مسافرین کے مذکورہ مطالبہ پر ریلوے انتظامیہ میں کھلبلی مچ گئی ۔ بالآخر ریلوے انتظامیہ نے S9 ڈبہ ٹرین کو جوڑ کر امرتسر کو روانہ کیا۔ روزانہ ساڑھے نو بجے روانہ ہونے والی سچکھنڈ ایکسپریس آج ساڑھے دس تا گیارہ بجے کے درمیان تقریباً دیڑھ گھنٹہ تاخیر سے روانہ ہوئی۔ اس موقع پر ریلوے پولیس اسٹیشن کے انسپکٹر سریش اُنونے، سب انسپکٹر راجیش یلگلوار، حوالدار اُتم کامبلے، وجئے کدم، کانچن راٹھوڑ، ونود کورڈے، سندیپ گوپنے، رام کاتکڑے، آر پی ایف کے امیت اُپادھیے و دیگر ملازمین کے علاوہ ریلوے سپرنٹنڈنٹ ایس ایس کالی چرن نے ریلوے اسٹیشن پر مسافرین سے ثالثی کی۔