ناندیڑ:3مئی (ور ق تازہ نیوز)کورونا متاثر کو ریمڈیسوردینے کےلئے متاثرین کے رشتہ داراسکی تلاش میں دن رات ایک کرکے گھوم رہے ہیں اسکے باوجود اسکی دستیابی ممکن نہیں ہورہی ہے۔ لیکن کچھ لوگ شہر میںاسکی کالابازاری کررہے ہیں۔فوڈاینڈ ڈرگس انتظامیہ کواطلاع ملی کہ شہر میں ایک نوجوان یہ انجکشن کافی زیادہ دام میں فروخت کررہا ہے اسلئے جعلی گاہک بھیج اس نوجوان کورنگے ہاتھوں پکڑاگیا ہے ۔

اسکی تحویل سے ریمڈسیور کے دوانجکشن ضبط کئے گئے ہیں۔ اس معاملے میں بھاگیہ نگر پولس اسٹیشن میںمقدمہ درج کیاگیا ہے ۔گزشتہ چند دنوںسے ناندیڑ شہر وضلع میں ریمڈیسور انجکشن کی بڑے پیمانے پر قلت ہونے کی وجہہ سے کورونا متاثرہ مریضوں کو بہت پریشانی ہورہی ہے ۔اپنے مریض کوبچانے کےلئے رشتہ دار شہر بھر میں انجکشن کی دستیابی کیلئے دردرگھوم رہے ہیں۔ایسی مصیبت کے وقت میں کچھ انسانی ہمدردی کامظاہرہ کرنے کے بجائے اس مصیبت کی گھڑی کواپنے کیلئے فائدہ مندبنانے کی کوشش کرکے لوگوں کاخون چوس رہے ہیں کیونکہ ریمڈیسور انجکشن کو ہزار بارہ سو روپے میں مل جاتا ہے اسے ہزاروں روپیوں میںفروخت کررہے ہیں۔ناندیڑ شہر میں اس سے قبل ریمڈیسور کی کالابازاری کرنے والوں کوپولس نے پکڑا ہے اسکے باوجودشہر میں آج بھی اسکی کالابازاری کرنے والوں کاگروہ سرگرم ہے ۔

لیکن پولس ابھی تک اصل ملزمین تک نہیں پہنچ سکی ہے جو اس طرح کا کاروباربڑے پیمانے پرکررہے ہیں۔کل کی کاروائی میں دگمبر بابوراو پھلے نامی نوجوان کوگرفتار کیاگیا ہے ۔ فوڈاینڈڈرگس انتظامیہ کواطلاع ملی تھی کہ یہ جونوجوان انجکشن کی کالا بازاری کررہا ہے اسلئے جال بچھایاگیااورفون پرربط قائم کرکے نوجوان سے کہاگیا کہ وہ ڈی مارٹ کے قریب دو انجکشن کے ساتھ پہنچے ۔ایک انجکشن 20ہزار میںفروخت کیاجارہاتھا ۔فوڈافسران نے جیسے ہی نوجوان نے انجکشن دیااور پکڑ لیااور پولس کے سپرد کردیا ۔یہ کاروائی اورنگ آباد کے اسسٹنٹ کمشنر سنجے کالے کی رہنمائی میں اسسٹنٹ کمشنر روہت راٹھوڑ] سسٹنٹ کمشنر پروین کالے ‘فوڈاینڈڈرگس انسپکٹر مادھو نمسے نے انجام دی ۔