ناندیڑ:10 اپریل۔(ورق تازہ نیوز)ریم ڈسیور انجکشن کی کالابازاری چوری چھپے جاری ہے ۔تاہم فوڈاینڈڈرگس محکمہ کی جانب سے بالاپور کے ایک نوجوان کواس انجکشن کوزائد قیمت پرفروخت کرنے کے الزام میںگرفتار کیا ہے ۔ وزیر آباد پولس اسٹیشن میں جرم درج کیاگیا ہے ۔ محکمہ کے ملازمین کورونا سے متاثر مریضوں کے رشتہ داروں کی مدد سے کالابازاری کرنیوالے افراد تک پہنچ رہی ہے ۔اس وقت ضلع میں ریم ڈسیور انجکشن کی شدید قلت پائی جاتی ہے۔

اس موقع کافائدہ اٹھاکرکچھ سماج دشمن افراد اس انجکشن کو 8تا9ہزار روپے میںفروخت کررہے ہیں۔دودن قبل ایسا ہی ایک واقع پیش آیاتھا ۔ کالابازاری کرنےوالے دو میڈیکل تاجر ‘ایک ایم آرا ورایک مزدور کو پولس نے گرفتار کیاتھا ۔ حکومت کی جانب سے اس انجکشن کی قیمت 800تا 1000 روپے مقرر کی گئی ہے ۔دت نگرناندیڑ کے ایک خانگی اسپتال شری سمرتھ اسپتال میں کورونا سے متاثر مریض کاعلاج جاری ہے جس کو چار ریم ڈیسور انجکشن کی ضرورت تھی ۔میڈیکل اسٹور پرانجکشن دستیاب نہ ہونے پرمریض کے رشتہ داروں نے انجکشن کی تلاش شروع کردی ۔

انھیں بالاپور کاایک نوجوان شریکانت سالوی ملا۔ اس سے فون پرربط قائم کیاگیاتو اس نے بتایا کہ انجکشن ہیں لیکن زائد قیمت پر فروخت ہورہے ہیں ۔ اس نے دوانجکشن کاایک ڈبہ دینے کےلئے 8ہزار400 روپے طلب کئے ۔ انجکشن خریدنے کامقام طئے کیاگیا ۔ بالآخراسے8ہزار400 روپے دئےے گئے اسی وقت فوڈ اینڈڈرگس محکمہ کے ملازمین نے سالوی کورقم لیتے ہوئے رنگے ہاتھوںگرفتار کرلیا ۔ مزید تحقیق جاری ہے۔