ناندیڑ:13 مارچ(ورق تازہ نیوز) 9 مارچ کو دیگلور ناکہ علاقے میں ایک پھل فروش عبدل یوسف قادر کو زخمی کرکے ور ایک شخص فرار ہو گیاتھا۔ لیکن 9 مارچ کی رات یوسف کا انتقال ہوگیا۔ اتوارہ پولیس اسٹیشن کی کرائم انویسٹی گیشن اسکواڈ نے آج قاتل کا پتہ لگالیا ہے۔ وہ فی الحال پولیس کی حراست میں ہے۔9 مارچ کو صبح 9 بجے کے قریب ایک نوجوان 20 سالہ پھل فروش عبدل یوسف قادر اپنی فروٹ گاڑی چلا رہا تھا کہ ایک شخص نے اس کی پیٹھ میں چھرا گھونپا اور فرار ہو گیا۔ وہ اسے جانتا تھا، لیکن اس کا نام نہیں جانتا تھا۔ یہ مقدمہ ابتدائی طور پر تعزیرات ہند کی دفعہ 326 کے تحت درج کیا گیا تھا۔ اس کا نمبر 44/2022 ہے۔

9 مارچ کی رات یوسف قادر زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے چل بسے۔ بعد میں تعزیرات ہند کی دفعہ 302 کو جرم میں شامل کیا گیا۔ پولیس نے جب جس سڑک سے حملہ آور فرار ہوا اس مقام کی تمام سی سی ٹی وی فوٹیج کا بغور معائنہ ورنہوں نے ایک شخص کوفوٹیج سے علاحدہ کرکے اسکی تلاش کرنا شروع کر د ی۔موصولہ اطلاع کے مطابق اتوارہ پولس اسٹیشن میں نو تعینات انسپکٹر آف پولیس بھگوان دھبڑگے کی رہنمائی میں سب انسپکٹر سید محبوب، گنیش گوٹھکے، پولس ملازمین راجیش سیٹیکر، وکرم واکڈے، حبیب چاو¿س، دنیشور قلندر، بھوکرے، کستورے نے یہ کارروائی کی ۔

پولس نے مشتبہ نوجوان عمر ان خان حسین خان عمر ۰۳سال ساکن ررحمت نگرکو گرفتار کیا ۔اسی قاتل نے یوسف پر جان لیواحملہ کیاتھاجس میںاسکی موت ہوگئی ۔اتوارہ پولس کی ٹیم نے اندرون 48 گھنٹے قاتل کو اپنی حراست میں لے لیا ہے ۔ جس پر پولیس سپرنٹنڈنٹ پرمود کمار شیوالے، ایڈیشنل سپرنٹنڈنٹ آف پولیس نیلیش مورے، ڈپٹی سپرنٹنڈنٹ آف پولیس ڈاکٹر سدھیشور بھور، لوکل کرائم برانچ انسپکٹردوارکا داس چکھلیکر نے مبارکباد دی ہے ۔