لوہا:23اکتوبر(ورق تازہ نیوز) ایک نابالغ لڑکی کو کپڑے دھونے کے لیے گھر بلایا اور کئی بارجنسی تشدد کا نشانہ بنایا گیا۔ جب اس بات کا انکشاف ہوا تو اس کی لڑکے کیساتھ شادی کروائی گئی لیکن لڑکی نابالغ ہے ۔ یہ واقعہ لوہا کےشہر کے سیوا داس نگر ٹانڈا میں پیش آیا ہے۔ ملزم نے نابالغ لڑکی کو مسلسل زیادتی کا نشانہ بنایا اور اسے ساتھ رکھنے سے انکار کردیا۔جس کے بعد لڑکی کی شکایت پر جمعہ کی شام لڑکے اور اس کے والدین کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا ہے۔ملزمان میں بیٹا وجے راٹھور ، ماں انوسیا بائی راٹھور اور والد انکوش راٹھور شامل ہیں۔

معاملے کی مزید معلومات یہ ہے کہ دو سال قبل وجے نے متاثرہ نابالغ لڑکی کواپنے گھر میں کپڑے دھونے کیلئے بلوایاتھااس وقت گھر میں کوئی نہیں تھا۔جس کا فائدہ اٹھاتے ہوئے اس نے لڑکی کو جنسی تشددکانشانہ بنایا اور اس بارے میں کسی کو بھی کچھ بھی بتانے پر جان سے مارنے کی دھمکی بھی دی۔ لیکن کسی طرح وجئے کے گھروالو ں کو اس بات کاپتہ چل گیااور اسلئے انھوں نے معاملے کودبانے کیلئے اس نابالغ لڑکی سے اپنے بیٹے کی شادی کروادی ۔

اس دوران بچے کی پیدائش بھی ہوئی لیکن اب متاثرہ لڑکی کوگھر میں رکھنے سے انکار کررہے ہیں جس کی اطلاع لڑکی نے اپنے والدین کو دی ۔اس معاملے میں لڑکی کی شکایت پر ملزم وجے راٹھور، انکش راٹھور اور انوسا بائی راٹھور کے خلاف لوہا پولس اسٹیشن میں چائلڈ سیکس اور چائلڈ میرج ایکٹ کے تحت مقدمہ درج کیا گیا ہے۔ سب انسپکٹر ریکھا کالے انسپکٹر سنتوش تمبے کی رہنمائی میں مزید تفتیش کر رہی ہے۔

ورق تازہ نیوز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں  https://t.me/waraquetazaonlineاور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔