ناندیڑ:بھوک ہڑتال واپس لینے کےلئے کھنڈنی وصول کرنے والا مراٹھا مہا سنگرام کاصدر گرفتار

351

ناندیڑ:8ستمبر۔ (ورق تازہ نیوز) ریجنل ٹرانسپورٹیشن آفس میں موٹر وہیکل انسپکٹر سے 20,000 کھنڈنی طلب کی گئی ۔اس معاملے میں مراٹھا مہا سنگرام ایسوسی ایشن کے مراٹھواڑہ کے صدر وکرم پی۔ وامنیکر کو دیہی پولیس نے رنگے ہاتھوں پکڑ لیا۔ اس کے خلاف دیہی پولس اسٹیشن میں مقدمہ درج کیا گیا ہے۔ اس کارروائی نے ضلع کے بہت سے کھنڈنی بہادروں میں ہلچل مچ گئی ہے ۔

7 ستمبر کو، ناندیڑ دیہی پولیس اسٹیشن کے علاقائی ٹرانسپورٹ آفس میں موٹر وہیکل انسپکٹر پنکج لکشمن راو یادو (عمر 34) نے شکایت کی کہ وکرم پا وامنیکر (مراٹھواڑہ کے صدر اے بی مراٹھا مہا سنگرام ایسوسی ایشن) وہ 17 اگست سے ریجنل ٹرانسپورٹ آفس کے خلاف بھوک ہڑتال پر ہیں۔ اس دوران دفتر میں آکر سرکاری کام میں رکاوٹیں کھڑی کررہے ہیں آر ٹی او نمس کے کیبن میںآکر ہم سے 25 ہزار روپے تاوان کا مطالبہ کیا۔

سمجھوتے کے اختتام پر 5000 روپے کی رقم ادا کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔ لیکن وہ رشوت نہیں دینا چاہتے تھے۔ا سلئے R.T.O کامت کو معاملے کی جانکاری دی گئی۔ اس نے اس کی اطلاع پولیس سپرنٹنڈنٹ پرمود کمار شیوالے کو دی۔ پھر اس نے پولس انسپکٹر اشوک گھورووند سے اس معاملے میں کارروائی کرنے کو کہا۔اس کے مطابق انسپکٹرگھورووند نے ایک ٹیم تشکیل دی اور قانونی کارروائی کے لیے لاتور پھاٹا کے لیے روانہ ہوئے۔ بھوک ہڑتال کرنے والے وکرم پاٹل کو ہوٹل پوجا گارڈن میں طلب کیاگیا جہاں پر پہلے سے جال بچھایاگیاتھا۔ جس وقت وکرم پاٹل شکایت کنندہ سے ہڑتال و اپس لینے کےلئے 20 ہزار روپے تاوان کا مطالبہ کیا۔ اور تاوان کی رقم قبول کرنے کے بعداس نے شکایت کنندہ سے کہا کہ وہ مذکورہ بھوک ہڑتال واپس لے رہا ہے۔ اس وقت پولس عملہ نے اس رشوت خور پاٹل کو رنگے ہاتھوں پکڑ لیا ہے ۔