BiP Urdu News Groups

ناندیڑ:14نومبر۔(ورق تازہ نیوز)ناندیڑمیونسپل کارپوریشن کی اسٹینڈئنگ کمیٹی کے 16 ارکان میںسے آٹھ ارکان کی دو سالہ معیادکااختتام یکم ڈسمبر کوہورہاہے اسلئے وہ ارکان اب سبکدوش ہوں گے اور نئے ارکان کا انتخاب عمل میں آئے گا۔

کانگریس پارٹی کے خواہشمند کارپوریٹرس رکن بننے کیلئے کوشاں ہیں اور اپنی سرگرمیاں تیز کردی ہیں ۔ کارپوریشن پرکانگریس برسراقتدار ہے۔ کارپوریشن میں کانگریس کے ارکان کی تعداد 73ہے جس میں ایک رکن فوت ہوگیا ہے۔بی جے پی کے پاس 6 ‘شیوسیناو آزاد ایک ایک سیٹ پر قابض ہے ۔

اسٹینڈئنگ کمیٹی میں 16ارکان ہوتے ہیں۔ ایک رکن عہدہ کیلئے متعلقہ پارٹی کے پاس کم از کم پانچ ارکان کی تعداد ہونا لازمی ہے ۔اگر اس حساب سے کانگریس پارٹی پرغور کیاجائے تو 16میں سے پندرہ نشستیں کانگریس کے پاس اور ایک نشست بی جے پی کو ملی ہے ۔

ہرسال اسٹینڈئنگ کمیٹی کے نصف ارکان سبکدو ش ہوتے ہیں اوراتنے ہی نئے ارکان کا انتخاب عمل میں آتا ہے اسلئے موجودہ 16میں سے 8 ارکان کی معیاد یکم ڈسمبر کو ختم ہورہی ہے ۔دو سال قبل نامزد دیانند واگھمارے ‘ راجیش یمنم ‘ عبدالرشید عبدالغنی ‘ فاروق حسین بدویل‘ شرینواس جادھو ‘کروناکوکاٹے‘ جیوتی کلیانکر ‘ پوجا پوڑے کی معیاد اب ختم ہورہی ہے ۔اسلئے انکی جگہ نئے ارکان کاانتخاب عمل میں آئے گا۔

نئے ارکان کی فہرست میں کشورسوامی ‘راجوکاڑے کے نام سرفہرست ہے جبکہ فرحت سلطانہ جاگیردار ‘جیوتی منیش کدم ‘ ناگیش کوکلوار ‘ پربھا یادو ‘ ریحانہ چاند پاشاہ قریشی]علیم خان‘آسیہ بیگم عبدالحبیب باغبان ‘جئے شری پوار‘کویتامڑے‘ عبدالغفار ‘عبدالفہیم کے نام بھی زیر بحث ہے ۔ اس مرتبہ چیرمین کاعہدہ مراٹھاسماج سے تعلق رکھنے و الے کارپوریٹر کو ملنے کی توقع ہے۔ اس دوڑ میں راجو کاڑے وور پرشانت تڑکے سب سے آگے ہے ۔ اگر دلت طبقہ سے کسی کا نام سامنے آنے پرنلیش پاوڑے اور شیلجہ کشور سوامی کوبھی موقع مل سکتا ہے ۔