ناندیڑ:آٹو رکشہ ڈرائیورنے مسافر کانقد رقم و دستاویزات کابیاگ واپس لوٹایا

ناندیڑ:27مئی ( ورقِ تازہ نیوز) آج دوپہر سوا بارہ بجے گم ہونے والے 40 ہزار روپئے اور ریٹائرمنٹ کے دستاویزات پر مشتمل ایک بیگ اتوارہ پولیس نے اردھاپور گھنٹہ میں ڈھونڈ کر اُس کے حقیقی مالک کو واپس کردیئے۔ اس بیگ کو اُس کا مالک ایک آٹو میں بھول گیا تھا۔ آٹو ڈرائیور نے ایمانداری کا مظاہرہ کرتے ہوئے بیگ کو واپس لوٹا دیا۔ جس پر پولیس اور بیاگ مالک نے آٹو ڈرائیور کا استقبال کیا۔ تفصیلات کے مطابق 26مئی کی دوپہر سوا بارہ بجے محمد کلیم الدین محمد شمس الدین نے پولیس ہیڈکوارٹر سے ایک آٹو میں سفر کیا اور قلعہ روڈ علاقہ میں اُترگئے۔

اُنکے پاس ایک بیگ تھا، جس میں ریٹائرمنٹ کے دستاویزات اور 40 ہزار روپئے رکھے ہوئے تھے۔ اس بیاگ کو وہ آٹو میں بھول گیا۔ جیسے ہی اُنھیں اپنے بیاگ کا احساس ہوا فوری طور پر اتوارہ پولیس اسٹیشن کو اس کی اطلاع دی۔ پولیس انسپکٹر بھگوان دھبڑگے نے اس معاملہ کی ذمہ داری پولیس کانسٹبل شیوسنب مٹھپتی کو سونپی۔ مٹھپتی نے جس مقام پر محمد کلیم الدین آٹو سے اُترے اُس علاقہ کے سی سی ٹی وی فوٹیج کا مشاہدہ کیا۔ جس کے بعد پتہ چلا کہ محمد کلیم الدین جس آٹو میں سفرکرکے آئے تھے اُس آٹو کا نمبر MH26N-1936 ہے۔ جس کے بعد مٹھپتی نے اتوارہ ٹریفک برانچ کے پولیس کانسٹبل داتا پلّے کے ذریعے ای چالان مشین سے آٹو مالک کا نام معلوم کیا۔ اس کا نام سیتارام دھونڈیبا جنکواڑ ساکن پانڈورنگ نگر ناندیڑ تھا۔

مگرپولس رکشہ ڈرائیور کوتلاش کرتی اس سے قبل ہی آٹو ڈرائیور سیتارام جنکواڑ بذات خود آٹو میں بھولے ہوئے بیاگ کو لے کر پولیس اسٹیشن اتوارہ میں حاضر ہوا۔ محمد کلیم الدین نے آٹو میں بھولے ہوئے بیگ کو بذات خود آٹو ڈرائیور کی جانب سے اتوارہ پولیس اسٹیشن میں لاکر دینے کے بعد اسسٹنٹ پولیس انسپکٹر رُپالی کامبڑے، پولیس کانسٹبل شیوسانب مٹھپتی اور بیگ مالک محمد کلیم الدین محمد شمس الدین نے آٹو مالک کو پھول کا ہار پہنا کر عزت افزائی کی۔ بیگ کو اُس کے حقیقی مالک تک لوٹانے کے لیے پولیس کی محنت اور آٹو ڈرائیور کی ایمانداری قابل ستائش ہے۔