وبا کیخلاف معقول میڈیکل سپلائی یقینی نہیں بناسکتے تو مستعفی ہوجاؤ : ممتا بنرجی

نئی دہلی ؍ کولکاتا: چیف منسٹر مغربی بنگال ممتا بنرجی نے آج کوویڈ۔ 19 کے دوبارہ پھیلاؤ پرر وزیراعظم کے خلاف اپنے لفظی حملے میں شدت پیدا کرتے ہوئے نئی کورونا لہر کو ’’مودی کی لائی مصیبت‘‘ قرار دیا اور مطالبہ کیا کہ اگر وہ اس وبا سے لڑنے کیلئے معقول میڈیکل سپلائی کو یقینی بنانے سے قاصر ہیں تو انھیں فوری مستعفی ہوجانا چاہئے۔ ممتا بنرجی نے اپنی ریاست میں لاک ڈاؤن کے امکان کو خارج کردیا حالانکہ وہاں نئے کورونا کیسوں میں تیزی سے اضافہ ہورہا ہے۔ انھوں نے کہا کہ 18 سال اور اُس سے زائد عمر کے تمام لوگوں کیلئے ویکسین لگانے کی عمومی مہم 5 مئی سے شروع کی جائے گی۔ انھوں نے الزام عائد کیا کہ ملک میں اس وبا سے لڑنے کیلئے تیارکردہ 65 فیصد ڈرگس کو پہلے ہی اکسپورٹ کیا جاچکا ہے۔ ممتا بنرجی نے ریاست کے مختلف اضلاع میں انتخابی جلسوں سے خطاب میں دعویٰ کیا کہ ملک میں کوویڈ۔ 19 کی وبا ماند پڑچکی تھی لیکن مرکزی حکومت کی سنگین ناکامی اور اس کی طرف سے غفلت اور بالکلیہ نااہلی کا نتیجہ ہے کہ ملک کو دوسری کورونا لہر کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔ انھوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن نے اسمبلی پولنگ کے بقیہ تین مرحلوں کو یکجا کرنے سے انکار کردیا۔ اس لئے وہ چیف منسٹر کی حیثیت سے کورونا وبا سے لڑنے اور اپنی پارٹی ترنمول کانگریس کیلئے انتخابی مہم چلانے پر مجبور ہیں۔


اپنی رائے یہاں لکھیں