• 425
    Shares

پریاگ راج:31اگست(یواین آئی) آل انڈیا اکھاڑا کونسل کے صدر مہنت نریندر گری نے آج کہا کہ افغانستان میں طالبان کا مضبوط ہونا ہندوستان کے لئے اچھا نہیں ہے۔مہنت نریندر گری نے یہاں دعوی کیا کہ کچھ طالبان کے حامی افراد ملک میں رہ کر اس کے خلاف ہی لگاتار سازش کررہے ہیں۔ نریندر گری یہیں نہیں رکے بلکہ مزید کہا کہ وہ ایک سازش کے تحت مسلم سماج کی آبادی کو بڑھا رہے ہیں۔ جو ملک کے لئے بالکل بھی خوش آئند بات نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ کچھ لوگ طالبان کی زبان بولتے ہیں اور ملک میں رہ کر اس کے خلاف نعرے بازی کرتے ہیں۔ایسے لوگ دہشت گردی کے زمرے میں آتے ہیں۔

نریندر گری نے الزام لگایا کہ ایک مخصوص کمیونٹی کے لوگ طالبان کے حامی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہاں رہ کر طالبان کی حمایت کرنا مایوس کن ہے ایسے لوگوں کے خلاف غداروطن کا مقدمہ درج ہونا چاہئے۔انہوں نے کہا کہ اگر ان کی آبادی میں اضافہ ہوتا ہے تو ملک کے لئے مسئلہ مزید سنگین ہوجائے گا۔مہنت نے وزیر اعظم نریندر مودی اور وزیر داخلہ امت شاہ سے ملک میں آباد کنٹرل قانون بنانے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ مرکزی حکومت کو آبادی کنٹرول کے لئے ایسا قانون لانا چاہئے تو یکساں طور سے سبھی ریاستوں میں نافذالعمل ہو۔ انہوں نے کہا کہ وقت رہتے ہوئے اگر ایسا نہیں کیا گیا تو ملک ایک سنگین مسئلے سے دوچار ہوگا۔

ورق تازہ نیوز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں  https://t.me/waraquetazaonlineاور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔